Tuesday, August 16, 2022

سری لنکا میں ایندھن کی قلت کے خلاف عوام سراپا احتجاج

سری لنکا میں ایندھن کی قلت کے خلاف عوام سراپا احتجاج
June 30, 2022 ویب ڈیسک

کولمبو (92 نیوز) - پٹرول دو یا عہدہ چھوڑ دو۔ سری لنکا میں ایندھن کی قلت کے خلاف عوام سراپا احتجاج بن گئی۔

بجلی کی لوڈشیڈنگ ، خوراک اور ادویات کی قلت جیسی سنگین پریشانیوں  سے نبردآزما سری لنکا میں پٹرول ختم ہو گیا ۔ حکومت نے ہنگامی حالات سے نمٹنے کیلئے   پٹرول اور ڈیزل  کی فروخت پر پابندی عائد کر دی ۔ پٹرول بحران کے شدت اختیار کرتے   ہی عوام ایک بار پھر سڑکوں پر آ گئے ۔ احتجاج میں ڈاکٹرز ، بینکرز سمیت   تمام مکاتب فکر کے لوگوں کی شرکت ہوئی۔ مظاہرین نے حکومت سے ایندھن کی فراہمی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا  پٹرول دو  یا عہدہ  چھوڑ دو۔

سری لنکن حکومت  نے  اگلے دو ہفتوں کے دوران بسوں، ٹرینوں اور ایسی گاڑیوں کو ہی کو ایندھن بھرانے کی اجازت دی  ہے  جو میڈیکل سروسز یا خوراک کی نقل و حمل کے لیے استعمال کی جاتی ہیں۔ سری لنکا میں ایندھن کے ذخائر کم ترین سطح تک پہنچ چکے ہیں اور ملک میں صرف ایک دن کی ضروریات پوری کرنے کے لیے ایندھن موجود ہے۔ شہری علاقوں میں سکول بند کر دیے گئے ہیں جبکہ حکام  نے  ملک کی دو کروڑ 20 لاکھ کی آبادی کو گھر سے کام کرنے کی ہدایت کی ہے۔

سری لنکن  حکومت کا کہنا ہے کہ پٹرول کی تازہ  کھیپ 22 جولائی کو پہنچے گی، جبکہ پٹرول اور ڈیزل  کی   انڈیا سے  آنے والی  ایک  کھیپ  13 جولائی  کو پہنچنے کا امکان ہے۔