Friday, August 12, 2022

سندھ ہائی کورٹ کا کراچی میں ایک اور غیرقانونی تعمیر ہونے والی پانچ منزلہ عمارت گرانے کا حکم

سندھ ہائی کورٹ کا کراچی میں ایک اور غیرقانونی تعمیر ہونے والی پانچ منزلہ عمارت گرانے کا حکم
January 15, 2022 ویب ڈیسک

کراچی (92 نیوز) سندھ ہائی کورٹ نے کراچی میں ایک اور غیرقانونی تعمیر ہونے والی پانچ منزلہ عمارت گرانے کا حکم دے دیا۔

سندھ ہائی کورٹ میں ایم پی آر کالونی میں غیر قانونی طور تعمیر ہونے والی پانچ منزلہ عمارت سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے ایس بی سی اے کو غیر قانونی تعمیرات کے خلاف کارروائی کا حکم دے دیا۔ غیر قانونی تعمیرات ختم کرا کر ڈیڑھ ماہ میں رپورٹ بھی طلب کر لی۔ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو ایم پی آر کالونی میں غیر قانونی طو پر تعمیر ہونے والی عمارت کی رجسٹریشن سے بھی روک دیا گیا۔ کے الیکٹرک، ایس ایس جی اور واٹر بورڈ کو بھی مذکورہ عمارت کو کنیکشن فراہم کرنے سے روک دیا۔

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے پانچ منزلہ غیر قانونی عمارت کی تعمیر سے متعلق رپورٹ جمع کرائی تھی۔ رپورٹ کے مطابق ایم پی آر کالونی میں تعمیر ہونے والی عمارت کی کوئی منظوری نہیں لی گئی ہے۔ ایم پی آر کالونی کا علاقہ کچی آباد گوٹھ آباد اسکیم میں آتا ہے جہاں ایسی تعمیرات کی اجازات نہیں ہے۔ ایم پی آر کالونی میں تعمیر ہونے والی پانچ منزلہ عمارت کراچی بلڈنگ اینڈ ٹاون پلاننگ قوانین کے خلاف ہے۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں کو غیر قانونی تعمیرات گرانے میں مدد کے لیے درخواست کی ہے۔

 درخواست گزار عارف شاہ کا کہنا تھا ایم پی آر کالونی میں غیر قانونی طور پر بغیر کسی اجازات کے پانچ منزلہ عمارت تعمیر کی جارہی ہے۔ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو غیر قانونی تعمیرات کے خلاف کاروائی کا حکم دیا جائے۔