Wednesday, September 28, 2022

پنجاب میں ماں بچہ صحت پروگرام اربوں روپے بجٹ کے باوجود اہداف حاصل کرنے میں ناکام

پنجاب میں ماں بچہ صحت پروگرام اربوں روپے بجٹ کے باوجود اہداف حاصل کرنے میں ناکام
February 20, 2022 ویب ڈیسک

لاہور (92 نیوز) پنجاب میں ماں بچہ صحت پروگرام اربوں روپے کے بجٹ کے باوجود اپنے اہداف حاصل کرنے میں ناکام رہا، سال دو ہزار اکیس میں ایک ہزار مائیں زچگی کے دوران جاں بحق ہو گئیں، مختلف بیماریوں سے اٹھاسی ہزار سے زائد بچے اپنی پانچویں سالگرہ سے پہلے جان گنوا بیٹھے۔

اربوں روپے لگانے کے باوجود ماں بچہ صحت پروگرام اہداف حاصل کرنے میں ناکام ثابت ہوا، پروگرام سے خواتین کی زچگی کی حالت میں ہونے والی اموات کم نہ کی جا سکیں۔

2021 میں پنجاب کے بنیادی مراکز صحت پر ایک ہزار مائیں زچگی کے مختلف مسائل سے جاں بحق ہو گئیں۔

ڈی جی مانٹیرنگ اینڈ ویلیوایشن رپورٹ کے مطابق پنجاب بھر کے بنیادی مراکز صحت پر گزشتہ سال پید ا ہونے والے بچوں میں سے اٹھاسی ہزار اکیس بچے جان گنوا بیٹھے۔ گزشتہ سال روزانہ دو سو اکتالیس بچے مختلف وجوہات کی وجہ سے جان کی بازی ہارتے رہے۔

رپورٹ کے مطابق پچیس ہزار دو سو اٹھ بچے پانچ سال کی عمر سے پہلے ہی دنیا سے چلے گئے، 13 ہزار 706 بچے اپنی پیدائش کے اٹھالیس دنوں کے اندر ہی فوت ہوئے ۔ آٹھ ہزار پنتالیس بچے پیدائش کے بعد ایک سال سے پہلے ہی انتقال کر گئے۔ تین ہزار چار سو ستاون بچے گزشتہ سال اپنی پانچویں سالگرہ سے پہلے ہی دنیا چھوڑ گئے۔

اتنی خطیر رقم خرچ کرنے کے باوجود بھی خواتین اور بچوں کی شرح اموات کو کم نہ کیا جانا اس پروگرام کے انتظامات کو چلانے والے افسران کی کاردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔