Saturday, November 26, 2022

مدھیا پردیش، آر ایس ایس غنڈوں نے مسلمانوں کے گھر مسمار، پھر خیموں پر قیامت ڈھا دی

مدھیا پردیش، آر ایس ایس غنڈوں نے مسلمانوں کے گھر مسمار، پھر خیموں پر قیامت ڈھا دی
October 9, 2022 ویب ڈیسک

مدھیا پردیش (92 نیوز) - مودی کی فاشسٹ حکومت بھارت میں مسلمانوں پر قہر ڈھانے سے باز نا آئی۔ پہلے مسلمانوں کے گھر گرائے، پھر خیموں پر قیامت ڈھا دی۔ دوروز قبل بھارت کی ریاست مدھیا پردیش میں ہی مسلمانوں کے گھروں کو بلڈوزر سے مسمار کر دیا گیا تھا۔

فاشسٹ مودی حکومت میں انتہا پسندہندؤں کے ہاتھوں مسلمانوں کی عزت و آبرو، جان مال، مذہبی مقامات اور املاک غیرمحفوظ ہوگئیں۔ مساجد کو شہید کرنا ان کی بے حرمتی کرنا بھارت میں انتہا پسند ہندؤں کا وتیرہ بن چکا ہے۔ گھروں کو مسمار کیا جارہا ہے۔ خیموں میں گزربسر پر مجبور مسلمانوں کا بھی جینا حرام کردیا گیا ہے۔

ریاست مدھیہ پریش کے شہر منڈسار میں مودی حکومت کے حمائت یافتہ آر ایس ایس کے غنڈوں نے ہندووں کی مذہبی تقریب پر پتھر پھینکے کا الزام لگا کر پہلے مسلمانوں کے گھر گرائے۔ گھر گرائے جانے کے بعد مسلمان خاندان خیمہ لگائے بیٹھا تھا کہ آرایس ایس کے غنڈوں اور پولیس نے خیموں کو توڑ کر بچا کھچا سامان بھی توڑ پھوڑ کر برباد کر دیا۔

مسلمان خاندان بچوں کے ہمراہ بے یاروددگار کھلے آسمان تلے پڑا ہے،متعدد مسلمانوں کے گھروں پر چھٹی کے روزگھر گرانے کے نوٹس بھی چسپاں کر دئیے۔ متاثرہ خاندانوں کا کہنا ہے کہ چھٹی کے روز نوٹس جان بوجھ کر لگوائے گئے تاکہ کسی عدالت سے شنوائی نا کرا سکیں۔

اس سے قبل ریاست کرناٹکا میں ہندوتوا کے پجاریوں نے ساڑھے پانچ سو سالہ قدیم مسجد اور مدرسہ پر ہلہ بول دیاتھا۔۔ ہندوتوا کے درجنوں غنڈوں نے تاریخی مدرسہ محمود گوان میں پہلے ہلہ بولا پھر بت رکھے اور پوجا کی۔ آر ایس ایس کے غنڈے مسجد میں پوجا کے دوران ہندو مذہبی نعرے لگاتے رہے۔