Wednesday, September 28, 2022

کلبھوشن کی گرفتاری کو پانچ سال مکمل، آج کا دن سکیورٹی اداروں کی پیشہ ورانہ کارکردگی کا ثبوت ہے، فواد چودھری

کلبھوشن کی گرفتاری کو پانچ سال مکمل، آج کا دن سکیورٹی اداروں کی پیشہ ورانہ کارکردگی کا ثبوت ہے، فواد چودھری
March 3, 2022 ویب ڈیسک

اسلام آباد (92 نیوز) - وزیراطلاعات فواد چودھری کا کہنا ہے بھارتی جاسوس حاضر سروس آفیسر کلبھوشن یادیو کی گرفتاری کو پانچ سال مکمل ہو گئے۔ آج کا دن ملکی سکیورٹی اداروں کی پیشہ ورانہ کارکردگی کا عملی ثبوت ہے۔

فواد چودھری نے ٹویٹ میں لکھا کلبھوشن یادیو کی گرفتاری نے پھر ثابت کیا کہ پاکستان میں دہشتگردی کے پیچھے ہندوستان کا ہاتھ ہے۔

بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کی گرفتاری کو پانچ سال مکمل ہو گئے۔ یہ دن آئی ایس آئی کی پیشہ وارانہ کارکردگی کا عملی ثبوت اور قابل فخر لمحہ ہے۔ آج کا دن بھارتی دروغ گوئی کی داستانوں میں سے ایک داستان ہے۔ بھارت کے لئے پشیمانی کا دن ہے جب اس نے اپنے حاضر سروس جاسوس کو اپنا ماننے سے بھی انکار کر دیا۔

حسین مبارک پٹیل کے نام سے ایران کے راستے پاکستان میں داخل ہونے والے بھارتی نیوی کے حاضر سروس کمانڈر کلبھوشن یادیو کو مارچ دو ہزارسولہ میں سکیورٹی اداروں نے بلوچستان کے علاقے ماشکیل سے گرفتار کیا۔ کمانڈر یادیو چاہ بہار میں جعلی پاسپورٹ پر داخل ہوا جہاں سے جعلی کاغذات پر پاکستان داخلے کی کوشش کی۔

کلبھوشن یادیو نے را کے لئے بلوچستان میں علیحدگی پسندوں سے تعلقات ہموار کئے۔ دو ہزار تیرہ میں باقاعدہ طور پر اپنے مشن پر کام شروع کیا۔ کلبھوشن کا مشن پاکستان میں دہشتگردی اور فرقہ واریت کو ہوا دینا تھا۔

بھارتی جاسوس اور دہشت گرد نیٹ ورک کے سرغنہ کمانڈر کلبھوشن نے اپنے بیان میں ان مذموم کارروائیوں کا اعتراف کرتے ہوئے بتایا کہ اس نے بلوچستان میں علیحدگی کی تحریک اور کراچی میں فرقہ واریت کو ہوا دینے پر کام کیا۔ کراچی اور گوادرمیں چیک پوسٹوں پر حملے کرانے کے لیے دہشت گردوں کو تربیت فراہم کی جبکہ پاکستان میں جاسوسی اور دہشتگردی کا ایک نیٹ ورک قائم کیا۔

کمانڈر یادیو نے اپنے اعترافی بیان میں کہا وہ کراچی میں داعش کے نیٹ ورک کو فنڈز دینے اور صفورا گوٹھ بس حملے سمیت دہشتگردی کی متعدد وارداتوں میں ملوث رہا ہے۔

اس وقت کے فوجی ترجمان لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ نے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے انکشاف کیا تھا کہ کمانڈر یادیو کو سی پیک کو سبوتاژ کرنے کی ذمہ داری بھی دی گئی تھی۔ کمانڈر یادیو کے حوالے سے تمام شواہد اور اعترافی بیانات بھارت کی ریاستی دہشتگردی کا منہ بولتا ثبوت ہیں ، جس پر بعد ازاں عالمی عدالت انصاف نے بھی مہر تصدیق ثبت کر دی۔

کلبھوشن کی گرفتاری اس بات کا ثبوت تھا کہ بلوچستان کی بدامنی میں بھارتی خفیہ ایجنسی را ملوث ہے۔ پاکستان نے ایک ذمہ دار ریاست ہونے کے ناطے کلبھوشن کو اپنی والدہ اور بیوی سے ملاقات کا موقع مہیا کیا اور انسانی ہمدردی اور اعلیٰ کردار کا مظاہرہ کیا۔