Friday, May 20, 2022

عمران خان نے حکومت پر کیسز کا ریکارڈ غائب کرنے کا الزام لگا دیا

عمران خان نے حکومت پر کیسز کا ریکارڈ غائب کرنے کا الزام لگا دیا
May 1, 2022 ویب ڈیسک

اسلام آباد (92 نیوز) - چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے حکومت پر کیسز کا ریکارڈ غائب کرنے کا الزام لگا دیا۔

اتوار کے روز اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے شریف خاندان کی مبینہ کرپشن پر وائٹ پیپر جاری کردیا۔

عمران خان کہتے ہیں ملک پر ایسے خاندان کو مسلط کیا گیا جو 30 سال سے ملک لوٹ رہا ہے۔ شہباز شریف پر 16 ارب کی کرپشن کے مقدمات ہیں، جس کے ثبوت مٹانا شروع کردیئے ہیں۔

سابق وزیراعظم بولے کہ ن لیگ پر کرپشن کیسز ان کے دور میں بنے ہوئے ہیں، مقصود چپڑاسی والے کیس کے سوا کوئی کیس نہیں بنایا۔ مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی کی حکومتیں دو دو دفعہ کرپشن پرنکالی گئیں۔ جب حکومت ملی  تو  تاریخ کا بلند ترین  کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 20 ارب ڈالر ملا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے صاحبزادے حسن اور حسین نواز ان کی حکومت میں باہر بھاگے، ن لیگ نے اپنے مقدمات ختم کرنے کے لیے کام شروع کردیا ہے، نوازشریف کے بچوں کے پاس مزید خفیہ جائیدادیں بھی ہیں۔ سلمان شہباز اب ملک میں واپس آنے کی تیاری کررہا ہے۔

عمران خان نے انہوں نے کہا کہ ایف آئی اے کے تفتیشی افسران بدل دیئے گئے، ان لوگوں نے اسپیشل پراسیکیوٹر ایف آئی اے کو عدالت میں پیش ہونے سے روک دیا۔ اب خدشہ ہے کہ یہ لوگ اپنے خلاف ثبوت مٹائیں گے۔ افسوس ہے ہمارا انصاف کا نظام ان مقدمات کو آخر تک نہیں پہنچا سکا۔ اُنہوں نے کہا کہ یہ امپورٹڈ حکومت اپنے کیسز ختم کرنے کے بعد پھر سے چوری کا بازار شروع کرے گی اور ملک کا خزانہ خالی کردیں گے۔

چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ شہباز شریف نے بطور وزیراعلیٰ وزیراعظم کا جہاز استعمال کیا، اس جہاز پر 39 بیرون ملک دورے کیے۔ شہباز شریف نے وزیراعظم کے جہاز پر 515 اندرون ملک دورے کیے، شہباز شریف پر وزیراعظم کا جہاز استعمال کرنے کا کیس نیب کا مقدمہ ہے۔ ایف آئی اے کے کیس کے سوا ان پر تمام مقدمات ان کے اپنے دور کے ہیں، ہمارے دور میں نیب آزاد تھی، ہمارا کوئی کنٹرول نہیں تھا۔

توشہ خانہ کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ توشہ خانہ سے مجھے بھی گاڑی ملی، آصف زرداری توشہ خانہ سے قانون بدل کر گاڑیاں لیں، میرے دور میں توشہ خانہ سے چیز لینے کے لیے 50 فی صد رقم دینے کا قانون بنا۔

سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ملک میں 10 سال میں جو قرضہ اوپر گیا ان لوگوں نے مل کر یہ سب کچھ کیا۔ گلزار نامی چپڑاسی کو اورنگزیب 50 لاکھ روپے دیتا ہے، اورنگزیب کو گجرات میں چیئرمین بیوٹی فکیشن لگا دیا جا تا ہے، احسن اقبال کے بھائی کو رولز نرم کرکے کنٹریکٹ دیا گیا۔

اُن کا کہنا تھا کہ نوازشریف کے دور حکومت 2013 کے دوران لاہور کا ماسٹر پلان تبدیل کیا گیا، لاہورکے ماسٹر پلان کو بدل کر مریم رائے ونڈ کے پاس 80 کروڑ کی زمین خریدتی ہے۔ مریم نے کروڑورں روپے کے چودھری شوگر ملزم کے شیئرز خریدے۔ مریم کے پاس کروڑوں روپے کہاں سے آئے کوئی منی ٹریل نہیں ہے۔

عمران خان بولے کہ افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ ہمارا انصاف کا نظام ان کو  سزا نہیں دے سکا، کبھی ان کی کمر میں درد ہوجاتا ہے، کبھی بینچ ٹوٹ جاتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ کسی کو شک نہیں ہونا چاہیے، ہماری مافیا سے لڑائی ہے۔