Friday, October 7, 2022

صدارتی انتخاب : تین بڑی امریکی ریاستوں میں ارلی ووٹنگ شروع

صدارتی انتخاب : تین بڑی امریکی ریاستوں میں ارلی ووٹنگ شروع
نیویارک (ویب ڈیسک) امریکہ میں صدارتی الیکشن کا میدان آٹھ نومبر کو لگے گا لیکن ریاست فلوریڈا، کنساس اور ٹیکساس میں بھی ارلی ووٹنگ کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔ بڑی تعداد میں ووٹرز نے پولنگ سٹیشنوں کا رخ کر لیا۔ امریکہ کا صدر کون بنے گا اس کا فیصلہ چودہ روز بعد ہو جائے گا۔ صدارتی الیکشن میں ریاست فلوریڈا کا کردار انتہائی اہم تصور کیا جاتا ہے جہاں میامی شہر میں ارلی ووٹنگ شروع ہو گئی ہے۔ پولنگ سٹیشنوں پر ووٹرز کی لمبی قطاریں دیکھنے میں آئیں۔ فلوریڈا کے ووٹرز کافی حد تک صدارتی انتخابات کے نتائج پر اثر انداز ہوئے ہیں۔ رائے عامہ کے مطابق فلوریڈا میں ڈیموکریٹ امیدوار ہلری کلنٹن کو اپنے ری پبلکن حریف ڈونلڈ ٹرمپ پر برتری حاصل ہے۔ صدارتی انتخاب میں کم ٹرن آوٹ کا فائدہ ٹرمپ کو پہنچے گا جبکہ زیادہ ٹرن آوٹ میں ہلری کا پلڑا بھاری رہے گا۔ ریاست ٹیکساس کے علاقوں سین اینجلو اور سین اینٹونیو میں بھی ووٹرز نے ارلی ووٹنگ کا فائدہ اٹھاتے ہوئے بڑی تعداد میں پولنگ پوائنٹس کا رخ کیا جبکہ ریاست کنساس کے علاقے ٹوپیکا میں بھی پولنگ سٹیشنوں پر ووٹرز کا رش رہا۔ رائے عامہ کے حالیہ سروے کے مطابق الیکٹورل کالج کے ووٹ میں بھی ہلری کلنٹن کو ڈونلڈ ٹرمپ پر سبقت حاصل ہے۔ ہلری کو تین سو چھبیس جبکہ ٹرمپ کو دوسوبارہ الیکٹورل ووٹ ملنے کا امکان ہے۔