Sunday, September 25, 2022

بھارت میں کرناٹک ہائی کورٹ نے مسلم طالبات کے حجاب پر پابندی کے خلاف درخواستیں خارج کر دیں

بھارت میں کرناٹک ہائی کورٹ نے مسلم طالبات کے حجاب پر پابندی کے خلاف درخواستیں خارج کر دیں
March 15, 2022 ویب ڈیسک

نئی دہلی (92 نیوز) - بھارتی ریاست کرناٹک کے تعلیمی اداروں میں حجاب پر پابندی کے حوالے سے ہائیکورٹ نے فیصلہ سُنا دیا۔ کرناٹک ہائی کورٹ نے مسلم طالبات کے حجاب پر پابندی کے خلاف درخواستیں خارج کر دیں۔

کرناٹک ہائیکورٹ نے تعلیمی اداروں میں حجاب پر پابندی کو برقرار رکھا۔ کرناٹک ہائیکورٹ کے چیف جسٹس ریتو راج اوستھی نے اپنے فیصلے میں کہا کہ حجاب پہننا ایک ضروری مذہبی عمل نہیں ہے۔

ہائیکورٹ نے اسکولوں اور کالجوں میں حجاب پہننے پر پابندی کو برقرار رکھتے ہوئے یہ بھی کہا کہ تعلیمی اداروں کو یونیفارم تجویز کرنے کا حق ہے۔

ہائیکورٹ نے مسلم طالبات کی طرف سے کالجوں میں حجاب پہننے کی اجازت کے لیے دائر درخواستوں کو بھی خارج کر دیا۔ کرناٹک کے بعض کالجوں کی جانب سے حجاب پہننے پر پابندی کے خلاف درخواست مسلم خواتین طالبات نے دائر کی تھی۔

بارہ فیصد مسلم آبادی والی ریاست کرناٹک میں انتہا پسند بی جے پی کی حکومت نے 5 فروری کو ہدایت نامہ جاری کیا تھا کہ تمام اسکول انتظامیہ کی جانب سے طے کیے گئے ڈریس کوڈ پرعمل کریں گے۔ اسکولوں میں باحجاب طالبات کے روکے جانے کے اس اقدام کے خلاف مظاہروں ہوئے تھے۔