Friday, September 30, 2022

یمنی وزیر دفاع حوثی باغیوں کے ڈرون حملے میں بال بال بچ گئے

یمنی وزیر دفاع حوثی باغیوں کے ڈرون حملے میں بال بال بچ گئے
صنعا (92 نیوز) یمن کے وزیردفاع پر حوثی باغیوں کی جانب سے ڈرون کے ذریعے قاتلانہ حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں ڈرائیورسمیت 2 فوجی اہلکار جاں بحق جبکہ متعدد زخمی ہوگئے، جنرل محمد علی المقدیشی اس حملے میں بال بال بچ گئے۔ غیر ملکی خبررساں ایجنسی کے مطابق یمنی صوبے مارب میں وزیر دفاع جنرل محمد المقدیشی پر ایک اہم اجلاس کی سربراہی کے دوران ڈرون حملہ کیا گیا ہے جس میں وزیر دفاع کا ڈرائیور اور ایک گارڈ جان سے گئے، دونوں فوجی اہلکار تھے جبکہ وزیر دفاع خوش قسمتی سے محفوظ رہے۔ اس سے قبل یمنی وزیر داخلہ احمد المیسری اور وزیر ٹرانسپورٹ صالح الجابوانی پر قاتلانہ حملہ کیا گیا تاہم دونوں محفوظ رہے، دونوں کی قیام گاہ کے قریب بارود سے بھری گاڑی کھڑی کی گئی تھی جسے پھٹنے سے قبل بارودی مواد کو ناکارہ بنا دیا گیا۔ یمنی وزارت دفاع اور یمنی حکومت کی طرف سے ابھی تک حملوں سے متعلق کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے تاہم حوثی باغیوں نے دونوں حملوں کی ذمہ داری قبول کرلی۔ یہ حملے یمن کی فوج کی جانب سے حوثی باغیوں کے مرکزی گڑھ صعدہ کی شاہراہ کا تسلط واگزار کرانے کے کیے گئے۔