Saturday, December 3, 2022

ہندو انتہا پسندوں کے ہاتھوں ٹرک ڈرائیور کے قتل کیخلاف سرینگر میں مکمل ہڑتال

ہندو انتہا پسندوں کے ہاتھوں ٹرک ڈرائیور کے قتل کیخلاف سرینگر میں مکمل ہڑتال
سرینگر (92نیوز) ہندو انتہا پسندوں کے ہاتھوں مسلمان ٹرک ڈرائیور کی شہادت کے خلاف مقبوضہ کشمیر میں آج مکمل ہڑتال ہے۔ بڑے پیمانے پر احتجاج کے خوف سے حریت رہنماوں کو نظربند کردیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق انتہاپسند ہندوو¿ں نے بھارت میں مسلمانوں پر زندگی تنگ کردی۔ مسلمان ٹرک ڈرائیور کا قتل جنونیت کی انتہائی بری مثال ہے۔ بھارت میں مودی مرض اس قدر بڑھ گیا ہے کہ مسلمانوں کی عزت‘ جان‘ مال سمیت کچھ بھی محفوظ نہیں‘ حکمران ہی نہیں عوام بھی جان کے درپے ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق مسلمان ٹرک ڈرائیور کی شہادت کے خلاف مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کے خون نے بھی جوش مارا اور وادی میں مکمل ہڑتال کردی گئی۔ تاجر تنظیموں اور حریت رہنماوں کی اپیل پر عوام نے بھی لبیک کہا۔ گلیاں اور بازار ویران رہے‘ کوئی دکان کھلی نہ تعلیمی ادارہ‘ تمام دفاتر بند رہے۔ بھرپور احتجاج نے مودی حکومت اور اس کے گماشتوں کے خلاف فیصلہ سنادیا مگر مسلمانوں کے ازلی دشمن ہندو انتہا پسند حکمران ٹس سے مس ہونے کو تیار نہیں۔ کٹھ پتلی انتظامیہ نے بڑے پیمانے پر مظاہروں کے خطرے کے پیش نظر تمام حریت رہنماو¿ں کو ان کی رہائش گاہوں پر نظربند کردیا۔ پوری وادی میں جگہ جگہ بھارتی پیرا ملٹری فورسز گشت کرتی رہیں۔