Monday, December 5, 2022

ہائیکورٹ نے پولیس میں کنٹریکٹ پر بھرتی ہونے والے ریٹائرڈ فوجیوں کی مستقلی  سے متعلق آئی جی کو دو ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے درخواست نمٹادی

ہائیکورٹ نے پولیس میں کنٹریکٹ پر بھرتی ہونے والے ریٹائرڈ فوجیوں کی مستقلی  سے متعلق آئی جی کو دو ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے درخواست نمٹادی
لاہور(92نیوز) ہائی کورٹ نے پولیس میں کنٹریکٹ پر بھرتی کیے گئے سابق فوجیوں کو مستقل نہ کرنے کے خلاف درخواست نمٹاتے ہوئے آئی جی پنجاب کو کنٹریکٹ پولیس اہلکاروں کی عرضداشت پردوماہ میں فیصلہ کرنے کاحکم دے دیا۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس محمد فیصل زمان خان نے ریٹائرڈ فوجیوں کی درخواست پر سماعت کی جس میں پنجاب پولیس کے سولہ سو کانسٹیبلان نے کنٹریکٹ ختم ہونے پر نوکری سے برخاست کر نے کے اقدام کو چیلنج کیا تھا۔ درخواست گزاروں کی جانب سے بتایاگیاکہ دوہزار تین میں پانچ سال کے کنٹریکٹ پر بھرتی کیا گیا تاہم اب کنٹریکٹ ختم ہونے پر انہیں مرحلہ وار نوکریوں سے برطرف کرکے ان کی جگہ من پسند افراد کو بھرتی کیا جارہا ہے۔ سرکاری وکیل نے بتایا کہ ملازمین کو مستقل کرنے کا معاملہ کمیٹی کے سپرد ہے جو مستقل کرنے کی منظوری دے گی جس پر عدالت نے درخواست نمٹاتے ہوئے آئی جی پنجاب کو دوماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم دے دیا۔