Tuesday, October 4, 2022

کھانے کا وقت ہے‘ پہلے کچھ کھا لیں : ڈاکٹر عاصم کا تفتیش کاروں کو جواب

کھانے کا وقت ہے‘ پہلے کچھ کھا لیں : ڈاکٹر عاصم کا تفتیش کاروں کو جواب
کراچی (92نیوز) ڈاکٹر عاصم حسین سے نیب کی تفتیش کی اندرون خانہ رپورٹ 92 نیوز نے حاصل کر لی۔ نیب حکام نے آغاز میں پوچھا ڈاکٹر صاحب! چائے پئیں گے یا پوچھ گچھ شروع کریں؟ ڈاکٹر عاصم بولے کھانے کا وقت ہے‘ کچھ کھا لیں‘ پھر بات کریں گے۔ تفتیشی ٹیم نے کہا کھائیں بھی لیکن پہلے سوئی سدرن کے معاملات کا جواب دے دیں۔ تفصیلات کے مطابق نیب کی حراست میں ڈاکٹر عاصم سے کرپشن ، زمینوں پر قبضے،منی لانڈرنگ اور پی ایم ڈی سی میں گھپلوں کی تحقیقات جاری ہیں۔ تحقیقات کے دوران نیب حکام اور ملزم عاصم حسین کے درمیان دلچسپ جملوں کا تبادلہ ہوا۔ سابق وزیر پیٹرولیم نیب کے مہمان بنے تو خوب دلچسپ مکالمہ ہوا۔ نیب حکام نے سوال کیا کہ ڈا کٹر صاحب چائے پئیں گے یا پہلے پوچھ گچھ کا سلسلہ شروع کریں۔ ڈاکٹر عاصم بھی پرانے کھلاڑی تھے۔ بولے اب تو کھانے کا وقت ہوگیا ہے‘ پہلے کچھ کھالیں پھر بات ہوگی۔ ڈاکٹر صاحب کھائیں بھی، پہلے ایس ایس جی سی کے معاملات کا جواب تو دے دیں ،نیب حکام نے ہلکے پھلکے موڈ میں کئی سوال جڑ دیے۔ تفتیش کارکہنے لگے ڈاکٹر صاحب ! ایس ایس جی سی میں بھرتیاں کس کے کہنے پر کیں؟ گیس کا کوٹہ غیر قانونی طور پر کیوں دیا ؟ سابق ایم ڈی ایس ایس جی سی شعیب وارثی اور ذوہیر صدیقی بھی بیٹھے ہیں‘ کافی ثبوت دیئے ہیں آپ کے خلاف۔ آپ پر کئی ارب روپے کی کرپشن، زمینوں پر قبضے اورمنی لانڈرنگ کی تحقیقات کررہے ہیں۔ جواب میں موصوف بولے جو تفتیش کرنی ہے کرلیں لیکن مجھے وکیل سے ملنے دیں اوربتایا جائے مجھ پر کیا کیا الزامات ہیں؟ نیب حکام نے کہا کہ آپ کے کارنامے تو بہت ہیں کیا کیا بتائیں؟ سب بتادیں گے‘ جلدی بھی کیا ہے‘ اب تو آپ ہمارے مہمان ہیں۔ پھر سوال ہوا ڈاکٹر صاحب باہر کس کس کو رقم بھیجی ہے یہ تو بتادیں۔ جواب میں بولے باہر تو پیسے بھیجتا ہی رہتا ہوں ،کس کس کو رقم دی یاد نہیں۔ آپ کے پاس کچھ ریکارڈ ہے تو بتادیں۔ ڈاکٹر عاصم سے نیب حکام کی تفتیش کا سلسلہ جاری ہے۔