Tuesday, September 27, 2022

کراچی: پانی موت بانٹنے لگا، کینجھر جھیل میں مردہ جانوروں کی موجودگی کا انکشاف، فیکٹریوں کی آلودگی سے پانی مزید زہریلا

کراچی: پانی موت بانٹنے لگا، کینجھر جھیل میں مردہ جانوروں کی موجودگی کا انکشاف، فیکٹریوں کی آلودگی سے پانی مزید زہریلا
کراچی (نائنٹی ٹو نیوز) کراچی اور ٹھٹھہ  کے شہریوں کے لئے پانی کے سب سے بڑے  ذخیرے کینجھر جھیل میں مردہ جانوروں کی موجودگی کا انکشاف ہوا ہے۔ جھیل میں فیکٹریوں کی آلودگیوں نے پانی کو مزید زہریلا  کر دیا جس سے لاکھوں افراد پیچیدہ  بیماریوں میں مبتلا ہونے لگے ہیں۔ زندگی کی بنیاد پانی موت بانٹنے لگا۔ کراچی کے شہریوں کو کینجھر جھیل سے ملنے والا پانی زہریلا ہو گیا۔ کھینجر جھیل  کراچی سے ایک سو بائیس کلومیٹر کی دوری پر ٹھٹھہ کے قریب واقع ہے۔ جھیل سے شہر قائد کے باسیوں کو روزانہ پانی مہیا کیا جاتا ہے لیکن اسی جھیل میں درجنوں مردہ جانوورں کا انکشاف ہوا ہے۔ کینجھر  جھیل  کی کے بی فیڈر ریگولیٹر میں گیدڑ، خنزیر، بھینسں اور دیگر جانور پھنسے ہوئے ہیں جس کے باعث یہاں شدید  تعفن ہے اور کھڑا ہونا مشکل ہے جبکہ جھیل میں فیکٹریوں اور کارخانوں کا زہریلا پانی بھی مسلسل شامل ہونے کا انکشاف ہوا ہے جس سے صاف پانی کی یہ جھیل زہر کے ذخیرے میں بدل گئی ہے۔ کینجھر جھیل سے آلودہ  پانی  کراچی کے علاوہ ٹھٹھہ شہر کو بھی فراہم کیا جاتا ہے جس سے ان شہروں میں ہر سال تیس لاکھ کے قریب افراد مختلف  بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں۔