Sunday, December 4, 2022

کراچی ، وفاقی وزیر علی محمد مہر کے گھر پر نامعلوم افراد کا دھاوا

کراچی ، وفاقی وزیر علی محمد مہر کے گھر پر نامعلوم افراد کا دھاوا

کراچی( 92 نیوز) کراچی  میں وفاقی وزیر علی محمد مہر کے گھر پرنامعلوم افراد کا دھاوا بول دیا ، ملزموں نے گھر میں داخل ہوکر نوکروں کو یرغمال بنایا ،  پھرعلی مہرکے کمرے میں داخل ہوکر  انہیں تشدد کا نشانہ بنایا۔

 نامعلوم افراد کے تشدد سے علی محمد مہر کے ماتھے اورسر پرچوٹ آئی جس کےپر انہیں  اسپتال منتقل کر دیا گیا ، پولیس کے مطابق بظاہر ڈکیتی مزاحمت لگتی ہے ،آئی جی سندھ  نے رپورٹ طلب کر لی۔

شہرقائد میں وفاقی وزیر علی محمد مہر بھی نامعلوم افراد سے محفوظ نہ رہے ، ڈسٹرکٹ ساؤتھ کےپوش علاقے میں نامعلوم افراد کے تشدد سے علی محمد مہر زخمی ہوگئے۔

واقعے کی اطلاع ملتے ہی پی ٹی آئی رہنما اسپتال پہنچے ، میڈیا سے گفتگو میں رکن سندھ اسمبلی خرم شیر زمان نےصوبائی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا۔

خرم شیر زمان  نے کہا کہ  جب وفاقی وزیر محفوظ نہیں تو عام آدمی کیسے محفوظ ہوسکتاہے۔

علی محمد مہرکے وکیل جاوید میر نے میڈیا  کوبتایا کہ 6 سے 7 افراد گھر میں داخل ہوئے، واقعہ بظاہر ڈکیتی کا معلوم ہوتا ہے۔ علی محمد مہرکونجی اسپتال میں طبی امداد دی جارہی ہے۔

علی محمد مہر کی عیادت کے لیے جی ڈی اے رہنما بھی نجی اسپتال پہنچے۔ ان کا کہنا تھا کہ علی محمد مہر سادہ طبیعت انسان ہیں انہوں نے کبھی سکیورٹی نہیں رکھی۔

دوسری جانب پولیس کا واقعے سے متعلق حتمی طور پرکوئی موقف سامنے نہ آیا۔ پولیس ذرائع کےمطابق واقعے کی مختلف پہلوؤں سے تفتیش کی جا رہی ہے اور رہائش گاہ کے اطراف موجود سی سی ٹی وی کیمروں سے مدد لی جارہی ہے۔