Wednesday, October 5, 2022

کراچی: رمضان کی آمد سے قبل ہی منافع خوروں کی چھری تیز، من مانی قیمتوں پر اجناس کی فروخت جاری

کراچی: رمضان کی آمد سے قبل ہی منافع خوروں کی چھری تیز، من مانی قیمتوں پر اجناس کی فروخت جاری
کراچی (نائنٹی ٹو نیوز) رمضان کی آمد سے قبل ہی منافع خوروں نے غریب عوام کی گردن پر مہنگائی کی تیز چھری پھیرنا شروع کر دی۔ سرکاری ریٹ لسٹ کو ردی کی ٹوکری میں ڈال کر من مانی قیمتوں پر اجناس کی فروخت جاری ہے۔ ہمیشہ کی طرح اس سال بھی رمضان المبارک کے آنے سے پہلے ہی منافع  خور عوام کی جیبیں خالی کرنے میں مصروف ہو  گئے۔ منافع خوروں کے سامنے ضلعی حکومت بے بس نظر آ رہی ہے۔ رمضان المبارک کی آمد سے قبل ہی اجناس کی قیمتوں میں اضافہ کیا جا چکا ہے۔ غریب کی دال مزید پتلی کرنے کی تیاری مکمل ہو چکی ہے۔ کراچی میں اس وقت دال چنا 140 اور دال مسور 145  روپے فی کلو فروخت کی جا رہی ہے۔ جہاں دال مونگ 150 روپے اور کالا چنا کے نرخ 130 روپے کر دیے گئے ہیں وہیں دال ماش 260 اور سفید چنا کی قیمت 150 روپے تک پہنچ چکی ہے۔ بیسن 140 سے 165 کلو تک  کر دیا گیا۔ خواتین  کڑاہی میں تیل یا گھی بھی ذرا سوچ سمجھ  کر ڈالیں کیونکہ 135 روپے کے سرکاری نرخ کے مقابلے میں کھلا گھی 170 میں فروخت کیا جا رہا ہے جبکہ کھلے تیل کی سرکاری قیمت 135 کی نسبت 165 روپے کر دی گئی ہے۔ افطار میں مشروب بنانا ہے تو خیال کریں 800 ایم ایل کی شربت کی بوتل کے نرخ 20 روپے اضافے کے بعد بڑھا کر 170 روپے کی ہو گئی ہے۔ اس سال بھی  شہری حکومت کی جانب سے بلند وبانگ دعوے کیے جا رہے ہیں کہ عوام کو سرکاری نرخوں پر اجناس کی فراہمی یقینی بنائی جا رہی ہے وہیں منافع خور ان دعوئوں کو ہوا میں اڑاتے نظر آ رہے ہیں۔