Tuesday, January 18, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

پلوامہ خودکش حملے کا بھارتی ڈرامہ بے نقاب ، مبینہ حملہ آور پہلے ہی فوج کی حراست میں تھا

پلوامہ خودکش حملے کا بھارتی ڈرامہ بے نقاب ، مبینہ حملہ آور پہلے ہی فوج کی حراست میں تھا
February 16, 2019
ممبئی ( 92 نیوز) پلوامہ خود کش حملے کا بھارتی ڈرامہ بے نقاب ہو گی ا، مبینہ خود کش حملہ آور کے پہلے ہی بھارتی فوج کی حراست میں ہونے کا انکشاف ہوا ہے ۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج پر حملے کا ڈرامہ بے نقاب ہو گیا ، عادل احمد ڈار مبینہ خود کش حملہ آور 2017 سے بھارتی فوج کی حراست میں تھا،نائنٹی ٹو نیوز نے سراغ لگا لیا۔ بھارتی میڈیا کے بے بنیاد الزامات کا پول کھل گیا، 9اکتوبر 2017 کو شوپیاں میں بھارتی فوج نے ایک آپریشن کیا جس میں بھارتی فوج کے کمانڈو ونگ نے حصہ لیا تھا ۔ آپریشن کا آغاز صبح چھ بجے کیا گیا  جس کے دوران ایک کشمیری نوجوان کو موقع پر ہی شہید کردیا گیا ۔ اسی روز قابض فوج نے ایک گھر کو دھماکے سے تباہ کیا جس میں ایک نوجوان شہید ہواجبکہ دوسرے کو ملبے سے زندہ گرفتار کیا گیا تھاجس کی شناخت عادل احمد ڈار کے نام سے کی گئی تھی۔ دو روز قبل پلوامہ میں ہونے والے دھماکے میں 44 بھارتی فوجی ہلاک ہوئے، بھارتی میڈیا نے پاکستان کے خلاف پروپیگنڈا مہم کا آغاز کرتے ہوئے مبینہ خود کش حملہ آور کی ویڈیو وائرل کی جس کی شناخت بھی عادل احمد ڈار کے نام سے کی گئی۔ سوال یہ ہے کہ عادل ڈار تو دو ہزار سترہ سے بھارتی فوج کی حراست میں ہے وہ جیل سے نکل کر کیسے خود کش حملہ کرسکتا ہے۔ عادل احمد ڈار کو 10ستمبر 2017کو بھارتی فورسز نے گرفتار کیا تھا جبکہ بھارتی میڈیا پر عادل احمد ڈار کو پلوامہ حملےکا خود کش بمبار ظاہرکردیا ۔