Wednesday, December 8, 2021
English News آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
English News آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

پاکستان میں ٹی بی کے مریضوں کی تعداد بڑھ گئی

پاکستان میں ٹی بی کے مریضوں کی تعداد بڑھ گئی
March 28, 2016
لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان دنیابھر میں ٹی بی (تپ دق) سے متاثرہ ملکوں کی فہرست میں چوتھے نمبر پر براجمان ہو گیا۔ ملک میں ہر سال 60 ہزار سے زائد افراد اس بیماری کے باعث موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق ٹی بی ایک ایسی بیماری ہے جو ایک مریض سے دوسرے کو لگتی ہے۔ اس میں عام طور پر زیادہ عمل دخل مریضوں اور ان کی دیکھ بھال کرنے والوں کی بے احتیاطی کا ہوتا ہے۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ ٹی بی کی کئی اقسام ہیں۔ بیکٹیریا کی وجہ سے لگنے والی یہ بیماری بنیادی طور پر پھیپھڑوں کا مرض ہے مگر یہ جسم کے دیگر حصوں کو بھی متاثر کر سکتی ہے۔ مریض کے کھانسنے، چھینکنے، تھوکنے یا کسی کے نزدیک بیٹھ کر سانس لینے سے بھی یہ بیماری کسی صحت مند انسان میں منتقل ہو سکتی ہے۔ ٹی بی ایک ایسا مرض ہے جس کا علاج کامیاب نہ ہو تو پھر یہ مہلک صورت اختیار کر جاتا ہے۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ عالمی سطح پر یہ بیماری اتنی عام ہے کہ ہر تیس سیکنڈ بعد ایک انسان ٹی بی کے ہاتھوں ہلاک ہو جاتا ہے۔ ایسے انسانوں میں سے نصف تعداد خواتین کی ہوتی ہے۔ اس مرض کی بڑی وجوہات آلودہ خوراک، تنگ وتاریک مکانات اور غلاظت کے وہ ڈھیر ہیں جو اس بیماری کے جراثیم کو پھیلانے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ طبی ماہرین کے مطابق جب مرض کی تشخیص ہو جاتی ہے تو آٹھ ماہ کا کورس مکمل کرنا ضروری ہوتا ہے لیکن عام طور پر مریض چند ماہ بعد ہی یہ علاج نامکمل چھوڑ دیتے ہیں اور مرض ان پر حاوی ہو جاتا ہے۔