Friday, January 21, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

پاناما لیکس  : ایف بی آر کا پی پی کے سینیٹر عثمان سیف اللہ کو جرمانے کا نوٹس

پاناما لیکس  : ایف بی آر کا پی پی کے سینیٹر عثمان سیف اللہ کو جرمانے کا نوٹس
December 26, 2016

 اسلام آباد(92نیوز)ایف بی آر نے پاناما لیکس میں شامل پیپلزپارٹی کے سینیٹرعثمان سیف اللہ کو جرمانے کا نوٹس جای کردیا، 34 آف شور کمپنیوں کے مالک کو نوٹسز کا جواب نہ دینے پر25 ہزار روپے جرمانے کا نوٹس جاری ہوگیا۔

تفصیلات کےمطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے پاناما لیکس میں شامل پیپلزپارٹی کے سینیٹر کے خلاف کارروائی شروع کردی ہے۔ ایف بی آر ان لینڈ ریونیو اینڈ انٹیلی جینس ونگ نے سب سے زیادہ آف شور کمپنیوں کے مالک کو جرمانے کا نوٹس جاری کیا ہے۔ ایف بی آر کے حکام کا کہنا ہے کہ پیپلزپارٹی کے سینیٹر عثمان سیف اللہ کو آف شور کمپنیوں کی ملکیت سے متعلق متعدد نوٹسز جاری کیے گئے لیکن سینیٹرعثمان سیف اللہ نے ایف بی آر کے کسی نوٹس کا جواب نہیں دیا۔ نوٹسز کا جواب نہ دینے پرسینیٹرعثمان سیف اللہ کو 25 ہزار روپے جرمانے کا نوٹس جاری کیا گیا ہے ایف بی آر کے حکام نے بتایا ہے کہ سیف اللہ خاندان کی پاناما میں 34 آف شور کمپنیاں ہیں جن کی ملکیت سے متعلق سیف اللہ خاندان ایف بی آر کو کوئی جواب نہیں دے رہا۔ اگر اس مرتبہ بھی کوئی جواب نہ دیا گیا تو سینیٹر عثمان سیف اللہ پر 25 ہزار روپے جرمانہ لگادیا جائے گا۔ ایف بی آر حکام کا کہنا ہے کہ پاناما لیکس میں شامل 33 دیگر افراد کو بھی جرمانے کے نوٹسز جاری کیے گئے ہیں ان میں معروف کاروباری شخصیات عبدالرشید سورتی، ماہین حسیب، پرویز حسیب، محمد یوسف، سلمیٰ یوسف، نور محمد ابراہیم، شاہ زیب اختر، نازیہ نذیر اور شاہد اقبال سرفہرست ہیں۔