Tuesday, October 4, 2022

وفاقی کابینہ کا ایک اور اجلاس، اتحادی وزرا مسلسل غیر حاضر

وفاقی کابینہ کا ایک اور اجلاس، اتحادی وزرا مسلسل غیر حاضر
 اسلام آباد (92 نیوز) وفاقی کابینہ کا ایک اور اجلاس ہوا جس میں اتحادی وزرا مسلسل غیر حاضر رہے۔ تحریک انصاف کی حکومت اور اس کے اتحادیوں کے درمیان برف نہ پگھل سکی۔ اتحادی جماعتیں مسلم لیگ ق اور ایم کیو ایم مسلسل ناراض نظر آتی ہیں۔ وفاقی کابینہ کے آج ہونے والے اجلاس سے بھی دونوں جماعتوں کے وزراء غائب رہے۔ طارق بشیر چیمہ اور خالد مقبول صدیقی کابینہ اجلاس میں شریک نہ ہوئے۔ وزیراعظم نے اجلاس کے دوران خالد مقبول صدیقی کے بارے میں استفسار بھی کیا۔ ذرائع کا کہنا ہے خالد مقبول کراچی اور طارق بشیر چیمہ بہاولپور میں تھے۔ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں زائرین سے متعلق پالیسی پیش کی گئی۔ ذرائع کےمطابق زائرین ٹور آپریٹرز کو وزارت مذہبی امور میں رجسٹرڈ کیا جائے گا۔ تفتان اور کوئٹہ میں زائرین کی رہائش کیلئے خصوصی انتظامات کئے جائیں گے۔ کوئٹہ تفتان روڈ پر سروس ایریاز بھی بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ زائرین کی فلاح کے لئے خصوصی فنڈ بھی قائم کیا جائے گا۔ ڈائریکٹر جنرل آفس ایران جبکہ عراق اور کوئٹہ میں ڈائریکٹر آفسز بنائے جائیں گے۔ کابینہ نے متعدد ایجنڈا آئٹمز کی منظوری دی۔ وزیراعظم نے اشیائے خورونوش کی قیمتوں میں کمی پر زور دیا اور کہا آئندہ کوئی چیز مہنگی نہیں کی جائے گی۔ عمران خان نے دالوں کی امپورٹ ڈیوٹی کم کرنے کیلئے کی ہدایت بھی کر دی۔ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں اصولی طور پر اتفاق کیا گیا کہ بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافہ نہیں کیا جائے گا۔