Friday, January 28, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

وزیراعظم کے صاحبزادوں کے اعتراضات جوابات کے ساتھ جمع

وزیراعظم کے صاحبزادوں کے اعتراضات جوابات کے ساتھ جمع
July 20, 2017

اسلام آباد(92نیوز)نیلسن اور نیسکول کے مالک حسین نواز ، مریم نواز بینیفیشل نہیں۔ نواز شریف کے ھل میٹل میں مالکانہ حقوق کی کوئی دستاویز نہیں، حسین نواز نے تمام تحفے اپنے والد اور بہن مریم نواز کو فطری محبت میں دیئے، عزیزیہ سٹیل ملز 63 ملین ریال میں بیچی اور مشینری جدہ منتقل کی گئی۔ وزیراعظم کے صاحبزادوں حسین اور حسن نواز نے جی آئی ٹی پر اعتراضات جوابات کے ساتھ سپریم کورٹ میں جمع کرادیئے۔

تفصیلا تکےمطابق وزیراعظم کے صاحبزادوں حسین اور حسن نواز کے اعتراضات بشمول دستاویزات سپریم کورٹ میں جمع کرادیئے گئے ہیں ۔حسین نواز کی متفرق درخواست169 صفحات پر مشتمل ہے۔ متفرق درخواست میں منروا اور جیپکا کی خدمات حاصل کرنے، خطوط ، مشینری کی جدہ منتقلی ۔کسٹم کلیئرنس کی دستاویزات اورانوائسز شامل ہیں ۔ اعتراضات میں کہا گیا ہے کہ جے آئی ٹی کی حاصل کردہ  دستاویزات غیر تصدیق شدہ اور غیر مصدقہ ہیں، اعتراض میں کہا گیا ہے کہ جے آئی ٹی  نے ذرائع سے حاصل کردہ دستاویز فریقین سے چھپائیں تاکہ مسترد نہ کردی جائیں ۔ بنک اسٹیٹمنٹ اور چیک سے ثابت ہوتا ہے کہ عزیزیہ سٹیل ملز 63 ملین ریال میں فروخت ہوئی۔مشینری کی جدہ منتقلی کا ریکارڈ موجود ہے جو کسٹم اور متعلقہ کمپنی کا تصدیق شدہ ہے۔ ریکارڈ سے ظاھر ھوتا ہے کہ مریم صفدر کا ان تمام امور میں عمل دخل نہیں تھا۔ منروا کمپنی کو مریم صفدر کا نام بطور نمائندہ دیا گیا بینیفیشل مالک کے طور پر نہیں۔حسین نواز شروع سے لے کر آج تک نیلسن اور نیسکول کے شیئرز کے مالک ہیں۔ جے آئی ٹی مصدقہ ذرائع سے معلوم کراتی تو مریم نواز کے بینیفیشل مالک ہونے کے الزامات ڈھیر ھوجاتے۔ ایک اور جواب میں کہا گیا ہے کہ دوبئی مل کی فروخت کا معاھدہ دوبئی کورٹ کے ریکارڈ میں موجود ہے۔ قطری شہزادے کے حوالے سے جواب میں بتایا گیا کہ جے آئی ٹی کی جانب سے حماد بن جاسم سے تفتیش نہ کرکے رپورٹ میں خلا پیدا کردیا گیا ہے۔۔وزیراعظم کے صاحبزادوں نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ نام نہاد جے آئی ٹی کی رپورٹ اور درخواستوں کا خارج کیا جائے۔