Sunday, January 23, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

ورلڈ بنک نے سندھ طاس معاہدے پر غیرجانبدار ماہر کا تقرر روک دیا

ورلڈ بنک نے سندھ طاس معاہدے پر غیرجانبدار ماہر کا تقرر روک دیا
December 13, 2016

اسلام آباد (ویب ڈیسک) مودی سرکار نے عالمی بینک میں اپنا اثرو رسوخ دکھانا شروع کردیا۔ عالمی بینک نے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی پر ثالثی عدالت کے سربراہ اور غیرجانبدار ماہرین کی تقرری کا عمل روک دیا۔ عالمی بینک کا کہنا ہے کہ اس سے سندھ طاس معاہدہ غیرفعال ہونے کا خدشہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق عالمی بینک نے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی پر بھارت کے خلاف دائرکی گئی پاکستان کی درخواست پر کارروائی روک دی ہے۔ پاکستان نے عالمی بینک میں داخواست دائر کرتے ہوئے اپنے دریاوں پر بھارت کی جانب سے کشن گنگا ڈیم اور رتلے ڈیم کی تعمیر پر اعتراض اٹھایا تھا۔

پاکستان نے بھارت کی جانب سے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی پر ثالثی عدالت کا سربراہ مقرر کرنے کی درخواست کی تھی۔ عالمی بینک نے پاکستان کی اس درخواست پر کارروائی روک دی ہے جب کہ بھارت کی جانب سے غیرجانبدار ماہرین کی تقرری کا عمل بھی روک دیا ہے۔

عالمی بینک نے کہا ہے کہ دونوں ملک ایسے اقدامات سے گریز کریں جس سے سندھ طاس معاہدے کو نقصان پہنچنے کا خدشہ ہے۔ سندھ طاس معاہدے پر دونوں ممالک متبادل طریقے سے اختلافات ختم کریں۔ عالمی بینک کے صدر نے وزیر خزانہ کو خط کے ذریعے آگاہ کردیا۔ امید ہے دونوں ممالک جنوری کے آخر تک تنازعات کو ختم کر لیں گے۔

پاکستان نے بھارت کے کشن گنگا ڈیم اور راتلے ڈیم کی تعمیر پر اعتراض کر رکھا ہے۔ ورلڈ بینک کی اس فیصلے سے پاکستان میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ آبی ماہرین کا کہنا ہے کہ لگتا ہے کہ عالمی بینک کے فیصلوں میں بھارتی اثرو رسوخ دکھائی دے رہا ہے۔

عالمی بینک نے گزشتہ ماہ پاکستان کے حق میں فیصلہ دینے ہوئے ثالثی عدالت کے سربراہ کی تعیناتی کرنے کا اعلان کیا تھا جس پر مودی حکومت نے سخت اعتراض کیا تھا اور اس فیصلے کو مسترد کردیا تھا۔ ایک ماہ بعد عالمی بینک کا اپنے فیصلے سے پیچھے ہٹنا بھارتی مداخلت کی نشاندہی کررہا ہے۔