Sunday, September 25, 2022

وائٹ کالرکرائم ختم کرنے کیلئے کچھ ہوناچاہئے،چیف جسٹس کے غیرملکی اکاؤنٹس میں ریمارکس

وائٹ کالرکرائم ختم کرنے کیلئے کچھ ہوناچاہئے،چیف جسٹس کے غیرملکی اکاؤنٹس میں ریمارکس
اسلام آباد ( 92 نیوز ) غیر ملکی اکاؤنٹس و اثاثہ جات کیس کے دوران چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ وائٹ کالر کرائم ختم کرنے کیلئے کچھ ہونا چاہئے ، اربوں روپے سوئٹزر لینڈ اور دبئی میں پڑے ہیں ، ایف آئی اے بتائے یو اے ای میں کتنے پاکستانیوں کے اثاثے ہیں ۔ بیرون ملک اثاثوں اوربینک اکاؤنٹس سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کی ، اس موقع پر ڈی جی ایف آئی اے بشیرمیمن عدالت کے روبرو پیش ہوئے جبکہ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت سے رپورٹ جمع کرانے کیلئے وفاقی حکومت کومہلت دینے کی استدعا کر دی ۔ پر ڈی جی ایف آئی اے بشیرمیمن نے عدالت کو بتایا کہ یواے ای میں 4 ہزار 221 لوگوں کے اثاثے اوراکاؤنٹس ہیں ، پیسہ واپس لانے کیلئے کوئی راستہ بناناہوگالیکن ہمارے پاس باہمی قانونی معاونت کااختیارنہیں ۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے ضروری نہیں باہرجانیوالے 200 ڈالربھی ظاہرکریں، لوگ شاپنگ کر نے کیلئے بھی باہرجاتے ہیں ہمارا اصل مقصد پیسے کی بیرون ملک منتقلی کوروکنا ہے ، عدالت نے وکیل احمرصوفی کوطلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت یکم اگست تک ملتوی کر دی۔