Sunday, November 28, 2021
English News آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
English News آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

نیوہورائزن نظام شمسی کے آخری حصے کائپربیلٹ کی جانب محو سفر

نیوہورائزن نظام شمسی کے آخری حصے کائپربیلٹ کی جانب محو سفر
August 31, 2015
واشنگٹن (ویب ڈیسک) پلوٹو کی واضح تصاویر زمین پر بھیجنے والا خلائی جہاز نیوہورائزن نظام شمسی کے آخری حصے کی جانب بڑھ رہا ہے۔ یہ جہاز کائپر بیلٹ کی جانب رواں دواں ہے جس میں لاکھوں چھوٹے بڑے سیارچے گردش کر رہے ہیں۔ نیوہورائزن اس بیلٹ میں ایم یو 2014 69 نامی سیارچے کا جائزہ لے گا۔ یہ سیارچہ پلوٹو سے ڈیڑھ ارب کلومیٹر فاصلے پر واقع ہے۔ اس کی چوڑائی 45 کلومیٹر ہے۔ خیال ہے کہ اس سے ہی پلوٹو جیسی دوسری بڑی دنیا کا جنم ہوا تھا۔ خیال رہے کہ نیو ہورائزن جولائی میں پلوٹو کے انتہائی قریب سے گزرا تھا اور اس نے بونے سیارے کی سطح سے محض 12 ہزار 500 کلومیٹر فاصلے پر گزرتے ہوئے اس کی تصاویر لی تھیں۔ یہی نہیں بلکہ اس خلائی جہاز نے پلوٹو کے چاند شیرن، سٹائکس، نکس، کیربیروس اور ہائیڈرا کے بارے میں معلومات بھی زمین پر بھیجی ہیں۔ امریکی خلائی تحقیقی ادارے ناسا کے سائنس دان کہتے ہیں اب نیو ہورائزن پلوٹو سے دور کائیپر بیلٹ کی طرف جا رہا ہے اور نئی دنیا سے آمنا سامنا ہونے کے بعد یہ زمین پر ڈیٹا بھی بھیج رہا ہے۔ توقع ہے کہ یہ مشن کافی کم خرچ ہوگا اور اس سے اہل زمین کو نئی اور زبردست سائنسی معلومات ملیں گی۔ گزشتہ سال موسم گرما میں ہبل دوربین کے ذریعے نیو ہورائزن کے خلائی سفر کے راستے میں پانچ برفیلے خلائی اجسام دریافت کیے گئے تھے جنہیں کم کر کے دو تک محدود کر دیا گیا تھا۔ نیوہورائزن رواں سال اکتوبر کے آخر یا نومبر میں نئے ہدف کی جانب راستہ بنانے کیلئے اپنے انجن دوبارہ چلائے گا۔ امکانی طور پر نیوہورائزن کو 2019ءمیں سیارچے کے قریب پہنچنا ہے۔