Monday, October 3, 2022

نیول چیف کا گوادر اور تربت میں پاک بحریہ کی تنصیبات اور بحری جہازوں کا دورہ

نیول چیف کا گوادر اور تربت میں پاک بحریہ کی تنصیبات اور بحری جہازوں کا دورہ
اسلام آباد ( 92 نیوز) نیول چیفنے  گوادر اور تربت میں پاک بحریہ کی تنصیبات اور بحری جہازوں کا دورہ کیا ، ترجمان پاک بحریہ کے مطابق  نیول ایئر اسٹیشن تربت میں نیول چیف کو پاک بحریہ کے فضائی اثاثوں اورآپریشنل منصوبوں پربریفنگ دی گئی۔ نیول چیف ظفر محمود عباسی کو مکران کوسٹ پر پاک بحریہ کی آپریشنل سرگرمیوں اوردستوں کی تعیناتی کا جائزہ پیش کیا گیا۔ نیول چیف کا گوادر اور تربت میں پاک بحریہ کی ساحلی تنصیبات اور کھلے سمندر میں بحری جہازوں کا دورہ چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے پاک بحریہ کی اہم میری ٹائم مشق سی اسپارک 2020 کے حوالے سے گوادر اورتربت میں پاک بحریہ کی تنصیبات اور کھلے سمندرمیں موجود پاک بحریہ کے بحری جہازوں کا دورہ کیا , دورے کے دوران نیول چیف کو مشق سی اسپارک کے آپریشنل منصوبوں کے حوالے سے بریفنگز دی گئیں۔ دورے کے دوران کمانڈر پاکستان فلیٹ وائس ایڈمرل آصف خالق اور کمانڈر کوسٹ وائس ایڈمرل فیصل رسول لودھی نے اپنے زیر انتظام تنصیبات میں آمد پر نیول چیف کا استقبال کیا۔ تربت آمد پر چیف آف دی نیول اسٹاف کو پاک بحریہ کے فضائی اثاثوں کی تعیناتی ،آپریشنل منصوبوں اور مشق کے دوران کئے جانے والے آپریشنز کے حوالے سے جامع بریفنگ دی گئی۔بعد ازاں،دورہ گوادرکے دوران نیول چیف کومکران کوسٹ پر پاک بحریہ کی آپریشنل سرگرمیوں کے انعقاد اور دستوں کی تعیناتی کا جائزہ پیش کیا گیا۔ کمانڈ سینٹرز میں بریفنگز کے بعد چیف آف دی نیول اسٹاف نے کھلے سمندر میں تعینات پاک بحریہ کے بحری جہازوں کا بھی دورہ کیا اور پاک بحریہ کے فلیٹ آپریشنز اور مشق سی اسپارک2020 کے دوران منعقد کی گئی مختلف آپریشنل سرگرمیوں کا جائزہ لیا۔ دورے کے دوران افسران اور جوانوں سے گفتگو کرتے ہوئے چیف آف دی نیول اسٹاف نے پاک بحریہ کی آپریشنل تیاری اور ملکی بحری سرحدوں کے دفاع کے لئے پیشہ ورانہ صلاحیتوں پر اطمینان کا اظہار کیا۔ انہوں نے دشمن کو سرپرائز کرنے کی تیاری اور کثیر الجہتی خطرات سے نمٹنے کے لئے افسران اور جوانوں کے جذبے اور عزم کو سراہا ۔نیول چیف نے کہا کہ پلوامہ حملے کے بعد پیش آنے والی کشیدگی کے دوران دشمن کی آبدوز کا سراغ لگانا پاک بحریہ کی حربی تیاری اور پیشہ ورانہ صلاحیتوں کا منہ بولتا ثبوت ہے۔