Friday, December 9, 2022

نقیب اللہ محسود کی ہلاکت ،آئی جی سندھ نے تحقیقاتی کمیٹی بنادی

نقیب اللہ محسود کی ہلاکت ،آئی جی سندھ نے تحقیقاتی کمیٹی بنادی

کراچی ( 92 نیوز ) پولیس مقابلے میں نقیب اللہ محسود کی ہلاکت نے کئی سوالات کو جنم دے دیا ۔ نقیب اللہ سہراب گوٹھ سے گرفتار ہوا تو پھر شاہ لطیف ٹاؤن میں مقابلہ کیسے ہوگیا؟ ۔ پولیس مقابلہ اصلی تھا یا نہیں ؟ ۔  مقابلے میں نقیب اللہ سمیت 4 دہشت گرد مارے گئے لیکن ایک بھی پولیس اہلکار زخمی نہیں ہوا؟ ۔ گتھی سلجھانے کیلئے آئی جی سندھ نے تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دے دی ۔

نقیب اللہ ماڈل تھا یا دہشت گرد  ایس ایس پی رائو انوار بھی ان سوالوں کا جواب دینے سے قاصر ہیں ۔

آئی جی سندھ نے ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی ثناء اللہ عباسی کی سربراہی میں تین رکنی کمیٹی تشکیل دے دی ۔ قائم کمیٹی مقابلے کے اصلی یا جعلی ہونے کا تعین کرے گی ۔

کمیٹی 3 روز میں رپورٹ مکمل کر کے آئی جی سندھ کو پیش کرے گی ۔  کمیٹی کا تحقیقات کی روشنی میں سفارشات بھی دینے کی ہدایت کی گئی ہے ۔