Monday, January 17, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

نقیب اللہ قتل کیس کے 7 ملزموں کی درخواست ضمانت خارج کر دی گئی

نقیب اللہ قتل کیس کے 7 ملزموں کی درخواست ضمانت خارج کر دی گئی
January 16, 2019
کراچی ( 92 نیوز) نقیب اللہ قتل کیس  میں انسداد دہشتگردی کراچی کی عدالت نے  7 ملزموں کی ضمانت کیلئے درخواست خارج کرتے ہوئے جیل بھیج دیا،نقیب اللہ محسود کے والد نے فیصلے کو انصاف کی فتح قرار دیا ہے۔ جعلی پولیس مقابلے میں نقیب محسود کے قتل کے کیس میں  انسداد دہشتگردی عدالت نے 7 ملزمان کی درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے جیل بھیجنے کا حکم سنادیا  ۔ مدعی کے وکیل کا کہنا ہے ملزمان کو 2 عینی شاہدین نے عدالت میں شناخت کرلیا تھا  ، مقتول نقیب محسود کے والد نے کہا کہ انصاف کی امید تھی اور آج انصاف کا بول بالا ہوگیا ۔ ملزمان میں اکبر ملاح، محمد انار، فیصل محمود، خیرمحمد عمران کاظمی، رئیس عباس زیدی اور شکیل فیروز شامل ہیں جبکہ ایک ملزم شکیل گرفتار اور جوڈیشنل ریمانڈ پر جیل میں ہے ۔ گزشتہ دنوں سپریم کورٹ نے  نقیب اللہ قتل کیس کے مرکزی ملزم راؤ انوار کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست مسترد کردی تھی۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے استفسار کیا کہ راؤ انوار لوٹا ہوا پیسہ بیرون ملک جمع کرانا چاہتا ہے، جب تک ٹرائل مکمل نہیں ہوتا ملزم پاکستان میں ہی رہے گا، پاسپورٹ ضبط کرنے کی بھی ہدایت کردی۔ ملزم نے موقف اپنایا کہ ضمانت پر ہوں ،عمرے کی ادائیگی کیلئے جانا چاہتا ہوں ، بچے بھی ملک سے باہر ہیں ان سے بھی ملنا ہے ، عدالت جب بھی بلائے گی حاضر ہوتا رہوں گا۔ چیف جسٹس ثاقب نثار کی زیر صدارت تین رکنی بنچ نے درخواست پر سماعت کی تھی ، دوران سماعت چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ  راؤ انوار مفرور تھا، کیسے پکڑوایا، یہ ہمیں پتا ہے اور اب بری کیسے ہوگیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ دوران حراست ملزم کو تمام سہولیات دی گئیں، راؤ انوار نے تو جوان  بچہ مار دیا ،  خاندان بیرون ملک ہے تو  انکی فیملی کو بھی پاکستان بلا لیں ، ملزم لوٹا ہوا پیسہ بیرون ملک جمع کرانا چاہتا ہے، جب تک ٹرائل مکمل نہیں ہوتا راؤ انوار پاکستان ہی رہے گا ۔ عدالت نے راؤ انوار کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست مسترد  کی اور  پاسپورٹ بھی ضبط کرنے کی ہدایت دی تھی ۔