Tuesday, November 29, 2022

نسل انسانی شدید خطرات سے دوچار !!! امریکی سپریم کورٹ نے ہم جنس پرستوں کی شادی پر عائد پابندی ختم کر دی

نسل انسانی شدید خطرات سے دوچار !!! امریکی سپریم کورٹ نے ہم جنس پرستوں کی شادی پر عائد پابندی ختم کر دی
واشنگٹن (ویب ڈیسک) امریکی سپریم کورٹ نے فیصلہ سنایا ہے کہ امریکہ کی کسی بھی ریاست میں ہم جنس پرستوں کا شادی کرنا ایک قانونی حق ہے۔ سپریم کورٹ کے اس فیصلے کے بعد 14 امریکی ریاستوں میں ہم جنس پرستوں کی شادی پر عائد پابندی ختم ہو گئی ہے۔ جسٹس اینتھنی کینیڈی نے اپنے فیصلے میں کہا کہ درخواست گزار نے قانونی طور پر برابری کی استدعا کی ہے اور آئین ان کو اس کی اجازت دیتا ہے۔ سپریم کورٹ کے اس فیصلے کے بعد کم از کم ایک دہائی سے جاری قانونی جنگ کا اختتام ہو گیا ہے۔ سپریم کورٹ کے اس فیصلے کے بعد جارجیا، مشی گن، اوہائیو اور ٹیکساس میں ہم جنس پرست شادی کرانے کےلئے بڑی تعداد میں پہنچے۔ یاد رہے کہ یہ وہ ریاستیں ہیں جہاں ہم جنس پرستوں کی شادی پر پابندی عائد تھی تاہم میسی سپی اور لوزیانا جیسی ریاستوں نے کہا ہے کہ ہم جنس پرستوں کو شادی کےلئے اس وقت تک انتظار کرنا ہو گا جب تک انتظامی ایشوز حل نہیں ہو جاتے۔ امریکی صدر باراک اوباما نے اس فیصلے کو سراہتے ہوئے اسے ”امریکہ کی جیت“ قرار دیا ہے تاہم عیسائی قدامت پسندوں نے اس فیصلے کی مذمت کی ہے۔ آرکنساس کے سابق گورنر اور صدارتی امیدوار مائیک ہکابی نے اس فیصلے پر تنقید کی ہے۔ ہم جنس پرستوں کی شادی کے خلاف مہم جو گروپ کی وکیل کیلی فیڈورک نے اس فیصلے کے بارے میں کہا ہے کہ عدالت نے ہزاروں امریکیوں کی آواز کو نظرانداز کیا ہے۔