Wednesday, January 26, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

منی بجٹ کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی کے سپرد نہ کرنے کا فیصلہ

منی بجٹ کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی کے سپرد نہ کرنے کا فیصلہ
December 31, 2021 ویب ڈیسک

اسلام آباد (92 نیوز) منی بجٹ کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی کے سپرد نہ کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا۔ قومی اسمبلی میں شق وار منظور کرایا جائے گا۔

مختلف شعبوں کو دستیاب 343 ارب روپے کی ٹیکسوں اور ڈیوٹیوں کی چھوٹ اور رعائتیں ختم کر دی گئیں۔ ڈیبٹ کارڈ، کریڈٹ کارڈ یا الیکٹرانک ٹرانسفر کے ذریعے کی جانے والی ادائیگیوں پر شناختی کارڈ کی شرط ختم ہو گئی۔ نان، سوئیوں، چپاتی، شیر مال اور بن پر بھی 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔ اسٹاک مارکیٹ کے حصص اور پرائز بانڈ پر 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس لگا دیا گیا۔ الیکٹرانک فائلنگ اور آن لائن مانیٹرنگ کے نظام کی نگرانی کیلئے ڈائریکٹوریٹ جنرل ڈیجیٹل انوائسنگ بنانے کا فیصلہ کر لیا گیا۔ سیگریٹ، سیگریٹ کے پیکٹ، سٹاک اور مارکیٹ سپلائی کی الیکٹرانک نگرانی ہو گی۔ سمگل شدہ سیگریٹ یا سیگریٹ بنانے والی کمپنی کے اسٹاک کو سرکاری تحویل میں لینے کے ان لینڈ ریونیو افسران کو اختیارات تفویض کر دئے گئے۔

 اس کے علاوہ ڈیوٹی فری شاپس سے قواعد سے ہٹ کر نکالی جانے والی اشیاء پر سیلز ٹیکس کی چھوٹ ختم اور برآمدات کو فراہم کئے جانے والے پارٹس پر جنرل سیلز ٹیکس کی چھوٹ ختم کر دی گئی۔ خام پیٹرولیم آئل کی درآمد پر بھی جنرل سیلز ٹیکس کی چھوٹ ختم کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ گوشت کیلئے سپلائی کئے جانے والے حلال مویشیوں اور زندہ مرغیوں پر دستیاب 15 ارب 11 کروڑ روپے کی چھوٹ ختم جبکہ صنعتوں کی بحالی، ماڈرنائزیشن کیلئے مشنری پر چھوٹ ختم کر کے 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔

برانڈ اور پیکنگ میں فروخت ہونے والی بریڈ پر چھوٹ ختم کر کے 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔ ریسرچ اور تجربات کیلئے فراہم کئے جانے والی مشنری اور آلات پر 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔ ماربل اندسٹری، گرینایٹ اندسٹری، جم سٹون اندسٹری میں استعمال ہونے والے مشنری اور آلات پر چھوٹ ختم کر کے 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔ ملک میں آرائش کیلئے سپلائی کئے جانے والے پودوں، بیلوں اور ان کے پنیری پر چھوٹ ختم کر کے 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کیا گیا ہے۔

ڈیجیٹل فارم میں فروخت ہونے والے قر آن پاک، اخبارات اور جرائد کیلئے سپلائی ہونے والی کاغذ اور نیوز پرنٹ پر چھوٹ ختم کر کے 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔ نئے کرنسی نوٹس ، بینک نوٹس، سٹاک مارکیٹ کے حصص اور پرائز بانڈ کی سپلائی پر 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔ سونے کی پلیٹس، اسپتالوں میں استعمال ہونے والے ڈیکسٹروس اور سیلین انفیوژن سیٹس پر بھی 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد اور عالمی امدادی اداروں کو سپلائی کی جانے والی اشیا اور غیر ملکی امداد کے عوض فراہم کی جانے والے اشیا پر چھوٹ ختم کر کے 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔

قدرتی آفات کے بعد پاکستان میں موصول ہونے والی امدادی اشیا پر چھوٹ ختم کر کے 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد، کموڈٹی ایکسچینج پروگرام کے ذریعے فراہم ہونے والے سامان پر بھی چھوٹ ختم کر کے 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا۔ غیر ملکی کمپنیوں کی جانب سے نمائشوں اور میلوں کیلئے حاصل کی جانے والی خدمات پر 17 فیصد جنرل سیلز ٹیکس لگا دیا گیا۔