Thursday, December 2, 2021
English News آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
English News آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

منتشر الخیالی کا مرض بلوغت کے بعد کسی بھی عمر میں شروع ہو سکتا ہے: طبی ماہرین

منتشر الخیالی کا مرض بلوغت کے بعد کسی بھی عمر میں شروع ہو سکتا ہے: طبی ماہرین
March 30, 2016
اسلام آباد (92نیوز) بائی پولر ڈس آرڈر جسے مینک ڈپریشن کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ اس بیماری میں مبتلا مریض کبھی کبھی حد سے زیادہ خوش ہو جاتا ہے اور کبھی اسے بے انتہا غصہ آتا ہے تو کبھی بے انتہا اداسی چھا جاتی ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق بائی پولر ڈس آرڈر تقریباً ایک فیصد لوگوں کو زندگی کے کسی حصے میں ہو سکتا ہے۔ ماہرین کہتے ہیں کہ یہ بیماری بلوغت کے بعد کسی بھی عمر میں شروع ہو سکتی ہے لیکن چالیس سال کی عمر کے بعد یہ بیماری شاذونادر ہی شروع ہوتی ہے۔ مرد اور عورت دونوں میں اس کی شرح یکساں ہے۔ عام طور پر اسے ایک وراثت میں منتقل ہونے والا خاندانی مرض سمجھا جاتا ہے تاہم تحقیق کے مطابق اس کا وراثت کے علاوہ اردگرد کے ماحول سے کچھ نا کچھ تعلق ضرور ہے۔ اس مرض کی وجہ سے مریض پر جو اثرات مرتب ہوتے ہیں ان میں خود اعتمادی کھو دینا، اپنے آپ کو بے کار اور ناکارہ سمجھنا، ماضی کی ہر بری بات کا خود کو ذمہ دار ٹھہرانا، خودکشی کے خیالات آنے لگنا یا خود کشی کی کوشش کرنا‘ نیند آنے میں مشکل ہونا یا جلدی آنکھ کھل جانا اور بھوک اور وزن کم ہونا شامل ہیں۔