Thursday, September 29, 2022

معاہدہ مری کی مدت آج مکمل ،بلوچستان کے وزیر اعلیٰ کی تبدیلی کا معمہ حل نہ ہوسکا

معاہدہ مری کی مدت آج مکمل ،بلوچستان کے وزیر اعلیٰ کی تبدیلی کا معمہ حل نہ ہوسکا
اسلام آباد(92نیوز)بلوچستان حکومت مری معاہدے کی مدت آج مکمل مگر وزیر اعلیٰ کی تبدیلی کا معمہ حل نہ ہو سکا ، بلوچستان کے  عوام  کیا چاہتے ہیں۔ تفصیلات کےمطابق  11 مئی 2013  کو ہونے والے عام انتخابات کے بعد  بلوچستان میں حکومت سازی کا معاملہ تناو کا شکار تھا جس کے حل کے لئے مسلم لیگ ن ، نیشنل پارٹی اور پشتونخوا میپ کے سربراہان  نے مری میں ایک معاہدہ طے کیا تھا جس کے تحت پہلے ڈھائی سال قوم پرست جماعت جبکہ آئیندہ ڈھائی سال مسلم لیگ ن کا وزیر اعلی ہونا تھا معاہدے کی مدت آج ختم ہوگئی وزیر اعلی کون ہو گا  یہ سوال جہاں سیاسی حلقوں میں بے چینی پیدا کئے ہوئے ہے وہیں عوامی حلقوں میں بھی اس کی باز گشت سنائی دے رہی ہے ۔ بلوچستان کے عوام کا کہنا ہے کہ شخصیات کی تبدیلی نہیں بلکہ  ایسے حکمران چاہیئے جو صوبے کے مسائل کے حل میں اپنا کردار ادا کر سکیں۔ حکومتی ذرائع کے مطابق وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف آج بیرون ملک دورے سے واپسی کے بعد بلوچستان میں وزیر اعلی کی تبدیلی کے فیصلے سے قبل صوبائی قیادت سے ملاقات میں انھیں اعتماد میں لیں گے،سیاسی تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ  مری معاہدے پر عمل درآمد نہ ہو ا تو صوبے میں سیاسی بحران پیدا ہونے  کا خدشہ ہے۔ دوسری طرف نواز شریف نے مسلم لیگی رہنما ثنا اللہ زہری کو اسلام آباد طلب کر لیا ہے تاکہ ان سے مشاورت کے بعد فیصلہ کیا جاسکے۔