Friday, March 1, 2024

محافظ کے ہاتھوں قتل ہونے والے ڈی آئی جی کے بیٹے کی تحقیقات جاری

محافظ کے ہاتھوں قتل ہونے والے ڈی آئی جی کے بیٹے کی تحقیقات جاری
April 22, 2017
کراچی (92نیوز)کراچی میں پولیس محافظ کے ہاتھوں قتل ہونے والے ڈی آئی جی پشاور کے بیٹے کے کیس کی تحقیقات جاری ہیں ۔ جائے وقوعہ سے آلہ قتل، خنجر اور دستانے تحویل میں لےکر فرانزک لیب بھجوادیئے گئے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ مقتول کے والد سے اظہار تعزیت کے لیے پہنچے  ۔ تفصیلات کےمطابق کراچی میں محافظ قاتل بن گئےڈیفینس خیابان سحر میں پولیس اہلکار نے پیسے نہ دینے پرڈی آئی جی پشاور شہاب مظہر کے بیٹے عمیر شہاب کو قتل کردیا ۔ ملزم پولیس اہلکار فقیر محمد کے مطابق اس نے رسی کی مدد سے مقتول عمیر شہاب کا قتل کیا۔ ایس ایس پی ساؤتھ ثاقب اسماعیل میمن نے بتایا کہ ملزم فقیر محمد کو ڈیوٹی ختم کرکے گاوں جانا تھا، جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرنے کےبعد تحقیقات کا سلسلہ جاری ہے۔ واقعے کےبعدآئی جی سندھ اے ڈی خواجہ اور ایڈیشنل آئی جی مشتاق مہر ڈی آئی جی پشاور کی رہائش گاہ پہنچے اور مقتول کے والد سے اظہار تعزیت کی ادھر پولیس نے ملزم کو گرفتار کرکے درخشاں تھانے منتقل کردیا ۔