Saturday, January 29, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

لندن فیلٹس ریفرنس ، جے آئی ٹی کی مکمل رپورٹ عدالتی ریکارڈ کا حصہ نہ بنانے کا فیصلہ

لندن فیلٹس ریفرنس ، جے آئی ٹی کی مکمل رپورٹ عدالتی ریکارڈ کا حصہ نہ بنانے کا فیصلہ
March 8, 2018

اسلام آباد (92 نیوز) لندن فیلٹس ریفرنس کی سماعت کے دوران واجد ضیاء نے جے آئی ٹی رپورٹ عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنانے کی استدعا کی ۔ عدالت نے جے آئی ٹی رپورٹ کو مکمل عدالتی ریکارڈ کا حصہ نہ بنانے کا فیصلہ کیا ۔
دوران سماعت جج نے کہا کہ آپ ایسے ہی رپورٹ عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنوا کر جان چھڑانا چاہتے ہیں جس پر واجد ضیا نے کہا کہ یوں تو کارروائی بہت لمبی ہو جائے گی ۔
جج نے کہا کہ کوئی بات نہیں، قانون کے مطابق کارروائی آگے بڑھائیں گے ۔ آپ نے جو جو دستاویزات جمع کیں وہ باری باری ریکارڈ کرائیں ۔
واجد ضیا نے کہا کہ ملزمان کی رقوم جدہ ، قطر اور برطانیہ کیسے منتقل ہوئی ، یہ سوال بھی تھا ۔ سوال تھا نواز شریف کے بچوں کے پاس کمپنیوں کے لئے سرمایہ کہاں سے آیا ؟ واجد ضیاء 3 بریف کیس 1 بکسے میں جے آئی ٹی کا ریکارڈ لے کر آئے ۔
ادھر کپیٹن صفدر نے کہا کہ لگتا ہے یہ سٹیل کے باکس مری روڈ پرایک دکان سے خریدے گئے ۔
دوسری طرف مریم نواز کے وکیل امجد پرویز نے جے آئی ٹی رپورٹ احتساب عدالت میں چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ والیم 2 میں قلمبند کئے گئے گواہوں اور ملزمان کے بیانات کو کارروائی کا حصہ نہیں بنایا جا سکتا ۔ قانون کے مطابق تحقیقاتی رپورٹ کو ثبوت کے طور پر پیش نہیں کیا جاسکتا ۔
نیب پراسیکوٹر نے کہا کہ نیب نے جے ائی ٹی رپورٹ کی بنیاد پر ریفرنس فائل کیا ہے ۔