Monday, October 3, 2022

فیض آباد پر تحریک لبیک کا دھرنا 18ویں ، کراچی میں چوتھے روز بھی جاری

فیض آباد پر تحریک لبیک کا دھرنا 18ویں ، کراچی میں چوتھے روز بھی جاری

اسلام آباد ( 92 نیوز ) اسلام آباد میں تحریک لبیک کا دھرنا 18ویں دن بھی جاری ہے ۔ دھرنے کے شرکا اپنے مطالبات پر قائم ہیں تو دوسری جانب حکومت بھی وزیر قانون زاہد حامد کو نہ ہٹانے پر بضد ہے ۔
انتظامیہ نے فیض آباد دھرنے کے شرکا کیلئے کھانے اور پانی کی سپلائی بند کردی ہے جبکہ کھانا اور پانی لانے والی گاڑیاں قبضے میں لی جانے لگی ہیں ۔ دوسری جانب کراچی میں بھی نمائش چورنگی پر دھرنا چوتھے روز بھی جاری ہے ۔
تحریک لبیک پاکستان کے دھرنے کے شرکا کیلئے انتظامیہ نے کھانا اور پانی بند کردیا ہے ۔ کھانا اور پانی لانے والی گاڑیوں کو پولیس نے قبضے میں لینا شروع کردیا ۔ مذاکرات میں ڈیڈلاک کا خمیازہ شہری خوار ہوکر بھگت رہے ہیں۔
ادھر دھرنا قائدین نے لچک دکھا دی ہے اور کہا ہے کہ وزیر قانون استعفی نہیں دیتے تو کم از کم انہیں کام سے تو روکا جائے ۔ حکومت اب بھی حیلے بہانوں سے کام لے رہی ہے ۔
گزشتہ روز پیر حسین الدین شاہ کی سربراہی میں مصالحتی کمیٹی نے وزیر قانون زاہد حامد کو کام سے روکنے کی تجویز وزیر داخلہ احسن اقبال کو بھجوائی تاہم اس تجویز پر بھی حکومت نے مثبت جواب نہ دیا ۔ حکومت کی غیر سنجیدگی نے معاملے کو بگاڑ دیا ہے ۔ دوسری جانب مذاکرات کا اب تک کوئی نتیجہ سامنے نہیں آسکا۔
دھرنے کے باعث مرکزی شاہراہوں سمیت سروس روڈز پر رکاوٹوں کے پہاڑ ہیں ۔ جگہ جگہ کنٹینرز نے گاڑیوں ، موٹر سائیکل سواروں سمیت پیدل چلنے والوں کےلئے بھی مشکلات کھڑی کردی ہیں ۔


کراچی میں بھی تحریک لبیک یارسول اللہﷺ کے کارکنوں کا نمائش چورنگی پر دھرنا چوتھے دن جاری ہے، شرکا نے کل جمعہ کا اجتماع سڑک پر کرنے کا اعلان کردیا۔۔ عاصم بھٹی کی رپورٹ
ادھر کراچی کی نمائش چورنگی پر بھی دھرنے کے شرکا کا عزم و ہمت غیر متزلزل ہے ۔ کراچی کا دھرنا چوتھے روز بھی جاری ہے ۔
آج بھی فضائیں لبیک یارسول اللہ کے نعروں سے گونج رہی ہیں۔ شرکاء نے عوام کی سہولت کےلئے سڑک ٹریفک کےلئے کھول دی ہے۔ شرکا ء نے کل جمعہ کا اجتماع نمائش چورنگی پرکرنےکا اعلان بھی کیا۔
دھرنے کےشرکا نےمطالبہ کیاکہ وفاقی وزیرقانون زاہد حامد کو عہدے سے برطرف کیاجائے۔مظاہرین نےکہاکہ مطالبات کی منظوری تک دھرناجاری رکھیں گے۔