Thursday, January 20, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

فیصل آباد: دھاگے پر ٹیکس، روئی کی درآمد پر پابندی نے پاور لومز فیکٹریوں کو ڈبو دیا

فیصل آباد: دھاگے پر ٹیکس، روئی کی درآمد پر پابندی نے پاور لومز فیکٹریوں کو ڈبو دیا
December 21, 2016

فیصل آباد (92نیوز) دھاگے کی درآمد پر ریگولیٹری ٹیکس اور روئی کی درآمد پر پابندی کے باعث فیصل آباد میں پاور لومز فیکٹریاں بند ہونا شروع ہو گئی ہیں۔ دھاگے اور روئی کی کمی کےباعث کپڑے کی صنعت بھی بری طرح متاثر ہو چکی ہے جس سے اس پیشے سے وابستہ افراد بھی پریشان ہیں۔

تفصیلات کے مطابق صنعتی شہر فیصل آباد میں پاور لومز پر کام کرنے والے لاکھوں مزدوروں کا روزگار داؤ پر لگ گیا ہے۔ دھاگے اور روئی کی قلت نے صنعت کو بری طرح متاثر کیا ہے۔ یارن کی درآمد پر 15 فیصد ریگولیٹری ٹیکس اور کاٹن کی درآمد پر مکمل پابندی نے مالکان کو پاور لومز فیکٹریاں بند کرنے پر مجبور کردیا جن کا کہنا ہے مہنگا دھاگہ خرید کر مارکیٹ کا مقابلہ نہیں کر سکتے۔

دن رات چلنے والی فیکٹریوں کو خام مال نہیں مل رہا۔ فیکٹری مالکان اب ہفتے میں دو دن فیکٹریاں بند کر رہے ہیں جس سے ہزاروں مزدوروں کا معاشی استحصال ہو رہا ہے۔ محنت کشوں کا کہنا ہے واحد ذریعہ معاش چھن جانے سے فاقوں کی نوبت آگئی ہے۔ دھاگے اور روئی کے بحران کے باعث جننگ، سپننگ، ویونگ اور سائزنگ یونٹ متاثر ہو رہے ہیں۔

یارن پر عائد ریگولیٹری ٹیکس اور کاٹن کی درآمد پر پابندی کے باعث صعنت کا پہیہ ڈگمگانے لگ گیا ہے۔ صنعتکاروں کا کہنا ہے کہ اگر یہ ٹیکس اور پابندیاں ختم نہ ہوئیں تو کام ٹھپ ہو کر رہ جائے گا۔