Sunday, September 25, 2022

فاٹا ضم نہ ہوا تو دہشتگردی میں اضافے کا خدشہ ہے ، عمران خان

فاٹا ضم نہ ہوا تو دہشتگردی میں اضافے کا خدشہ ہے ، عمران خان

کراچی ( 92 نیوز ) تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کراچی کے مسائل کا حل ٹیکنو کریٹ ٹیم کو قرار دیدیا ۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا ضم نہ ہوا تو دہشت گردی میں اضافہ ہوسکتا ہے ۔
کورنگی انڈسٹریل ایریا میں تاجروں سے خطاب میں عمران خان نے کہا کہ اگر فاٹا کے پی کے میں ضم نہ ہونے پر دہشت گردی بڑھنے کا خدشہ ہے ۔
عمران خان نے شکوہ کیا کہ مافیاز کا مقابلہ کرنے پر دہشت گردی کے 4 مقدمات بنائے گئے ۔ لندن جیسا نظام کراچی کو دینے کا مطالبہ کیا ہے ۔
چیئرمین تحریک انصاف نے مزید کہا کہ حکمرانوں سے ملک نہیں چل رہا ۔ قبل از وقت انتخابات کا اعلان کر دینا چاہئے ۔ مجرم کو پارٹی کا ہیڈ بنانے کیلئے 90 ارب روپے ڈویلپمنٹ فنڈز کے نام پر ارکان اسمبلی کو دیئے گئے ۔
عمران خان نے سانحہ ماڈل ٹاؤن سے متعلق اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ میرے گھر کے باہر بھی متعدد احتجاج ہوئے مگر کبھی لاٹھی چارج نہیں کیا گیا ۔ پانامہ فیصلے پر اگر میں سڑکوں پر نہ نکلتا تو یہ اب تک دفن ہو چکا ہوتا ارو اس پر پھول اگ چکے ہوتے ۔ خواجہ آصف نے خود اسمبلی فلور پر کہا کہ میاں صاحب پریشان نہ ہوں ، قوم چند دنوں میں پانامہ کو بھول جائے گی مگر پی ٹی آئی کی شبانہ محنت نے اسے بھولنے نہیں دیا ۔
عمران خان نے کہا کہ ملتان میٹرو میں کرپشن کی چین سے خبر آئی ۔ ایس ای سی پی نے معاملہ دبا رکھا تھا ۔
عمران خان نے لانڈھی فیوچر کالونی میں رکشہ الٹے دیکھا تو اپنا قافلہ رکوالیا اور متاثرین کی مدد کروائی۔
پارٹی رہنما فردوس شمیم نقوی کی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس میں عمران خان نے کہا کہ پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کیلئے کراچی کا صحت مند ہونا ناگزیر ہے۔
انہوں نے کہا کہ ماضی میں کرپشن کے گاڈ فادر کے خلاف عدالت میں جنگ لڑرہا تھا اس لئے کراچی کو زیادہ وقت نہیں دے سکا۔