Thursday, January 27, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

عمران خان کی زیرصدارت لاہور میں پارٹی اجلاس، پاناما لیکس کے معاملے پر تحریک چلانے کی قرارداد منظور

عمران خان کی زیرصدارت لاہور میں پارٹی اجلاس، پاناما لیکس کے معاملے پر تحریک چلانے کی قرارداد منظور
April 8, 2016
لاہور (نائنٹی ٹو نیوز) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی زیرصدارت لاہور میں پارٹی اجلاس ہوا۔ اجلاس میں پاناما لیکس کے معاملے پر تحریک چلانے کی قرارداد منظور کر لی گئی۔ چئیرمین سیکرٹریٹ گارڈن ٹاؤن لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ فیصلے کا وقت آگیا ہے۔ تحقیقات نہ ہوئیں تو سڑکوں پر احتجاج ہو گا اور اس بار وہ رائیونڈ جائیں گے۔ جمہوریت میں جب کسی حکمران پرانگلی اٹھتی ہے تووہ خود جواب دیتا ہے نہ کہ درباری جواب دیتے ہیں، یہ بادشاہت میں ہوتا ہے کہ لیڈر کے بجائے درباری جواب دیں، اس لیے شریف خاندان خود پر لگنے والے الزامات کا جواب دے۔ انہوں نے کہا کہ میں آج اپنی پارٹی کے صوبائی اسمبلی ممبران سے ملا اور ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ اگرپانامہ اسکینڈل پر تحقیقات صحیح نہ ہوئیں تو باہر نکلیں گے۔ یہ ملک اس وجہ سے مقروض ہوا ہے کہ اس کے حکمران منی لانڈرنگ کر کے پیسہ باہر لیکر جاتے ہیں اور اپنے بزنس بناتے ہیں۔ ہر پاکستانی پر پینتیس ہزارسے ایک لاکھ روپے تک قرضہ چڑھ چکا ہے، اس ملک میں گندے پانی کی وجہ سے بچوں کی اموات ہوتی ہیں، ہر بیس منٹ میں ایک عورت بچے کے پیدائش کے وقت مر جاتی ہے اور اس ملک کے لٹیرے حکمران پیسہ لوٹ کر باہر لے جاتے ہیں۔ یہ لوگ شوکت خانم پر انگلیاں اٹھا کر اپنی طرف سے توجہ ہٹانا چاہ رہے ہیں۔ اسمبلی میں تمام لوگ ان کرپٹ لوگوں کو بچانا چاہتے ہیں۔ مجھ پرجب الزام لگتا ہے تو میں جواب خود دیتا ہوں نہ کہ میری پارٹی دیتی ہے اور میرے تمام اثاثہ جات کی تفصیلات میری ویب سائٹ پر موجود ہیں سب جانتے ہیں۔ الزامات کے جواب میں کہا جاتا ہے کہ شوکت خانم کا پیسہ بھی باہر ہے،شوکت خانم کا پیسہ تو آتا ہی باہر سے ہے اور اس میں کچھ بھی ڈھکا چھپا نہیں ہے سب سامنے ہے، اس طرح آپ بچ نہیں سکتے ابھی تو پارٹی شروع ہوئی ہے ابھی بہت کچھ سامنے آئیگا، یہ انٹرنیشنل معاملہ ہے۔ انہوں نے حسین نواز کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو ان چھے سو کروڑ روپوں کا جواب دینا ہے کیونکہ آپ کا باپ وزیراعظم ہے۔ میاں صاحب نے اپنی تقریرمیں خود ہی سچ بول دیا کہ جو کرپشن کرتا ہے وہ پیسہ اپنے نام پر نہیں رکھتا، میاں صاحب آپ نے بھی سارا پیسہ بچوں کے نام پر منتقل کر دیا ہے۔ پی ٹی وی ن لیگ کا پروپیگنڈہ سیل بنا ہوا ہے، یہ قومی ادارہ ہے نہ کہ کسی پارٹی کا۔ انہوں نے اسمبلی کی تقاریر نہیں دکھائیں۔ میاں صاحب پی ٹی وی پر بیٹھ کر اپنی صفائیاں دے سکتے ہیں تو پی ٹی وی اس قوم کے پیسوں سے چلتا ہے تو ہمیں بھی اجازت ہونی چاہیے کہ ہم قوم کو دوسرا رخ دکھا سکیں۔ ڈیوڈ کیمرون جب پرائم منسٹر نہیں تھے تب ان کا چالیس لاکھ روپیہ آف شور میں تھا اس پر بھی ان سے استعفیٰ مانگا جا رہا ہے، تو میاں صاحب کا تو اربوں باہر پڑا ہے، میاں صاحب کو جانا ہی ہو گا۔ جب پرائم منسٹر کی اخلاقی قوت ختم ہو جائے تو اس کو استعفیٰ دینا چاہیے، میاں صاحب کس منہ سے زرداری کو کہا کرتے تھے کہ ملک کی لوٹی دولت پیٹ پھاڑ کر واپس لائیں گے، ایان علی کو کس منہ سے پکڑ رکھا ہے جب خود منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں۔