Monday, December 5, 2022

عمران خان نے 24 ستمبر کو رائیونڈ مارچ کا اعلان کر دیا

عمران خان نے 24 ستمبر کو رائیونڈ مارچ کا اعلان کر دیا
کراچی(92نیوز)تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ ہم 24ستمبر کو رائیونڈ کی طرف مارچ کرینگے ۔الطاف حسین نے جو زبان پاکستان کے خلاف استعمال کی تب فیصلہ کیا کہ کراچی آوں گا ۔ انہوں نے کہا کہ ادارے تب تک ٹھیک نہیں ہونگے جب تک نوازشریف وزیراعظم رہینگے۔ تفصیلات کےمطابق کراچی میں یوم دفاع کے موقع پر جلسے سے خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہےکہ ہم پاناما لیکس پر نواز شریف کے خلاف 24 ستمبر کو رائیونڈ کی طرف مارچ کرینگے اس کاجواب ان سے لے کر ہی رہینگے میں پورے ملک کو وہاں لے کر جاوں گا ۔۔ انہوں نے کہا کہ جو زبان الطاف حسین نے پاکستان کے خلاف استعمال کی تب فیصلہ کیا کہ میں کراچی آکر بتاوں گا لوگ اب اکیلے نہیں آپ کے ساتھ پاکستان ہے،کراچی کی معیشت بڑھتی ہے تو اسکے ملک پر بھی اچھے اثرات پڑتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اہلیان کراچی عظیم لوگ ہیں 25سال سے کراچی پر جو خوف چھایا ہوا تھا وہ ختم ہوگیا ہے اور اگر پہلے یہ خوف نہ ہوتا تو کراچی خوشحال شہر ہوتا اور دبئی بھی نہ بنتا ۔عمران خان نے کہا کہ جینے کا راز ہے کہ مرنے کا خوف دل سے نکال دینا چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہ ایک دہشتگرد الطاف حسین نے کراچی پر قبضہ کیا اور سارے ملک کو عذاب میں مبتلا کر دیا ۔ آج سے 51سال پہلے انڈیا نے ملک پر حملہ کیا تو ہم سب چھت پر کھڑے ہو کر بم دھماکے دیکھتے تھے میں خود بندوق نکال کر کھڑا ہوگیا کہ مجھے فوج میں جانا ہے۔ عمران خان نے کہا کہ جب بنگلہ دیش ہم سے علیحدہ ہوا تو بہت تکلیف ہوئی کیونکہ ایسٹ اور ویسٹ ملا کر دنیا کا سب سے بڑا اسلامی ملک بنا تھا ۔انہوں نے کہا کہ لندن میں بیٹھ کر الطاف حسین نے کراچی کے معصوموں کا قتل کروایا اور شہر کے امن کو برباد کر دیا ہےاس نے تو مہاجروں کو بھی نہیں بخشا۔ انہوں نے کہا کہ الطاف حسین نے را کے ساتھ مل کر ملک میں انتشار پھیلایا انڈٰیا میں الطاف حسین کے پوسٹر لگے دیکھے تو پتاچلا کہ یہ را نے لگوائے ہیں الطاف حسین کی زبان سے وہ نکلا جو اس کے دل میں تھا کیونکہ وہ پاکستان سے واقعی نفرت کرتا تھا اور اس کا بغض باہر نکل آیا ۔ انہوں نے کہا کہ کراچی پولیس کو ٹھیک کرنا ہےاس  کوغیر سیاسی کرنا ہوگا اور میرٹ پر افسران تعینات کرنے ہونگے ۔ عمران خان نے کہا کہ کے پی کے میں پانچ سو پولیس اہلکار دہشتگردی میں شہید ہوئے ، ہم نے سب سے پہلے پولیس کو غیر سیاسی کیا ۔ عمران خان نے اسفند یار ولی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ جب ان کی حکومت تھی تو وہ پشاور جانے کی بجائے ملائشیا اور دبئی سے تقریریں کرتے تھے۔ عمران خان نے پنجاب حکومت پر بھی خوب تنقید کی اور کہا کہ پنجاب کا 55 فیصد بجٹ لاہو ر میں استعمال ہورہا ہے جبکہ پاکستان کا ساٹھ فیصد پیسہ کراچی سے آتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نیب نے خود کہا ہے کہ 12 ارب روزانہ کی کرپشن ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے کرپشن کرنے کیلئے اداروں کو تباہ کیا ہم ایف بی آر کو آزاد کرینگے اور نیب کو مضبوط کرینگے۔ انہوں نے کہا کہ ادارے تب تک ٹھیک نہیں ہونگے جب تک نوازشریف وزیراعظم رہینگے کیونکہ وہ خود اداروں کو تباہ کررہےہیں ۔ عمران خان نے سپیکر پر بھی خوب بھڑاس نکالی اور کہا کہ نواز شریف کا پاناما میں نام آیا ہے میرانام تو نہیں آیا سپیکر نے میرے خلاف ریفرنس بھیج دیا لیکن وزیراعظم کے خلاف نہیں بھیجا ۔ انہوں نے کہا کہ اگر میرے خلاف یہ سب کچھ ہوسکتا ہے تو عام آدمی کے ساتھ کیا ہوگا ۔