Tuesday, December 6, 2022

طیبہ تشدد کیس : سپریم کورٹ نے پولیس کو اعلیٰ سطح کی کمیٹی بنانےاور بچی کے ڈی این اے ٹیسٹ کا حکم دیدیا

طیبہ تشدد کیس : سپریم کورٹ نے پولیس کو اعلیٰ سطح کی کمیٹی بنانےاور بچی کے ڈی این اے ٹیسٹ کا حکم دیدیا

 اسلام آباد(92نیوز)اسلام آباد میں گھریلو ملازمہ پر تشدد کیس سپریم کورٹ نے پولیس کو اعلیٰ سطح کی تحقیقاتی کمیٹی بنانے اور بچی کے ڈی این اے کا حکم دے کر تین روز میں رپورٹ بھی طلب کر لی۔

تفصیلات کےمطابق چیف جسٹس کی سربراہی میں 2رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ والدین بھی بچوں کو بنیادی حقوق سے محروم نہیں رکھ سکتے بچی کے تشدد کے معاملے میں راضی نامہ کیسے کردیا؟؟ بچی کا جلد طبی معائنہ کرایا جائے تاکہ ثبوت ضائع نہ ہوں ۔ دوسری جانب میڈیا سے گفتگو میں تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ طیبہ تشدد کیس زیادہ اہم ہے سپریم کورٹ نے معاملے کا نوٹس لے کر بہت اچھا کیا۔

اس موقع پر تشدد کا شکار بچی کے دعویدار والدین نے کہا کہ طیبہ کا اصل نام ثنا ءہے بچی ڈیڑھ سال پہلے کمالیہ سے غائب ہوئی میڈیکل ٹیسٹ کرایا جائے تاکہ معلوم ہو سکے کہ بچی ہماری ہے۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر بچی اور اس کے حقیقی والدین کو پیش کرنے کی ہدایت کردی جبکہ جج کی اہلیہ ماہین ظفر کو جواب جمع کرانے کے لیے وقت دے دیا۔اسسٹنٹ کمشنر پوٹھوہار کو بھی آئندہ سماعت پر طلب کر لیا گیا۔