Wednesday, October 27, 2021
English News آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
English News آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

طالبان کابل میں داخل،افغان حکومت اقتدار چھوڑنے پر رضا مند

طالبان کابل میں داخل،افغان حکومت اقتدار چھوڑنے پر رضا مند
August 15, 2021 --- ویب ڈیسک

کابل (92 نیوز) طالبان کابل میں داخل ہو گئے۔ افغان حکومت اقتدار چھوڑنے پر رضا مند ہو گئی۔ ملک میں پر امن انتقال اقتدار کی راہ ہموار ہو گئی۔

صدر اشرف غنی اور امراللہ صالح طالبان سے مذاکرات کے بعد صدارتی محل چھوڑ گئے ۔ غیرملکی میڈیا کے مطابق صدر اشرف غنی مستعفی ہو گئے۔ افغان طالبان کا کہنا ہے اشرف غنی کا استعفیٰ منظور کر لیا۔ نئی حکومت کی تشکیل کے حوالے سے کابل سے وفد دوحہ جائیگا۔ ملا برادر نے دوحہ سے کابل آنے کی تیاریاں شروع کر دیں۔

20 سال بعد افغان طالبان کابل میں داخل ہو گئے۔ طالبان نے افغانستان کے تمام بارڈرز کا کنٹرول حاصل کر لیا ۔ کابل کے چاروں اطراف سے طالبان دارالحکومت میں داخل ہو رہے ہیں۔ طالبان کو کسی قسم کی مزاحمت کا سامنا نہیں کرنا پڑ رہا۔ افغان فوجیوں کو پوزیشن چھوڑ کر گھر جانے کا کہا گیا ہے۔

کابل میں طالبان کے داخل ہونے کے چند گھنٹے بعد قائم مقام وزیر داخلہ عبدالستار مرزاکوال نے اقتدار پرامن طریقے سے عبوری حکومت کو منتقل کرنے کا اعلان کیا ہے۔ افغان طالبان نے بگرام ایئربیس کی جیل سے قیدیوں کو بھی رہا کر دیا ہے۔ برطانوی میڈیا کے مطابق افغان طالبان کے ترجمان نے دعویٰ کیا ہے کہ طالبان نے بگرام ایئربیس کی سب سے اہم جیل پر قبضہ کر لیا ہے۔

افغان طالبان کی جانب سے افغانستان کے دارالحکومت کابل  کا گھیراؤ کرنے کے بعد کابل کی سڑکوں پر شدید ٹریفک جام ہے۔ افغان حکومت کی غیر یقینی صورتحال کے پیش نظر شہری بینکوں سے رقم نکلوانے نکل پڑے۔ بینکوں کے باہر افغان شہریوں کی طویل قطاریں لگی ہوئی ہیں۔

کابل میں دکانیں اور بازار بند ہیں ، کچھ سرکاری دفاتر کو بھی تالے لگے ہیں جبکہ فوج اور پولیس اپنی ڈیوٹی پوسٹس چھوڑ کر چلے گئے ہیں۔

ادھر افغان طالبان نے سابق وزیرداخلہ علی احمد جلالی کو عبوری حکومت کا سربراہ مقرر کر دیا۔ افغان میڈیا کے مطابق علی احمد جلالی افغانستان میں روسی فوج کے خلاف لڑتے رہے۔

روس نے افغانستان سے اپنا سفارتی عملہ واپس نہ بلانے کا اعلان کر دیا ہے۔ برطانوی میڈیا کے مطابق روس کے دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ کابل سے سفارتی عملے کو واپس بلانے کا کوئی منصوبہ نہیں۔ سفارتی عملہ پُرسکون ماحول میں کام کر رہا ہے۔

دوسری جانب طالبان نے صوبہ بامیان کے شہر بامیان پر قبضہ کے بعد گورنر کے دفتر، پولیس ہیڈکوارٹر اور انٹیلی جنس دفاتر کو خالی کرا لیا۔ شہر میں موجود تمام سرکاری گاڑیوں اور اسلحہ کو بھی تحویل میں لے لیا۔

تازہ ترین خبریں حاصل کرنے کے لیے فوری اطلاع کی اجازت دیں

آپ کسی بھی وقت دائیں طرف نیچے بیل آئیکن پر صرف ایک کلک کے ذریعے آسانی سے سبسکرائب کر سکتے ہیں۔