Friday, September 30, 2022

شریف فیملی کا پراپرٹی سے تعلق ہو سکتا ہے ، نواز شریف کا نہیں ، وکیل امجد پرویز

شریف فیملی کا پراپرٹی سے تعلق ہو سکتا ہے ، نواز شریف کا نہیں ، وکیل امجد پرویز
اسلا اباد (92 نیوز) احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس کیس کی سماعت میں حتمی دلائل دیتے ہوئے مریم نواز کے وکیل امجد پرویز نے کہا کسی مرحلے پر شریف فیملی کا پراپرٹی سے تعلق ہو سکتا ہے ، نواز شریف کا نہیں۔ ایون فیلڈ ریفرنس کیس کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے کی۔  مریم نواز کے وکیل وکیل امجد پرویز نے آج دوسرے روز بھی حتمی دلائل جاری رکھے۔ دوران سماعت وکیل امجد پرویز نے دلائل دیتے ہوئے کہا نواز شریف لندن فلیٹس کے مالک ہیں نا ہی 1993 سے قابض ہیں۔ دوران سماعت امجد پرویز نے کہا نیب کی جانب سے مظہر رضا بنگش کا ایک لیٹر پیش کیا گیا، نیب کی جانب سے 6 ستمبر 2017 کو اس گواہ کی شہادت پیش کی جبکہ اس کا بیان حلفی کو نیب 30 اگست کو موازنہ کر چکی تھی جو دستاویزات مظہر بنگش کی جانب سے جمع کروائی گئی وہ فوٹو کاپی کی صورت میں تھیں۔ امجد پرویز نے کہا کوین بینچ کے فیصلے کی کاپی قابل قبول شہادت ہی نہیں، آڈر کوین بینچ کا ہے مگر عدالتی ریکارڈ کا پاکستانی قانون شہادت کے تحت آئے گا۔ اس حوالے سے قاونون شہادت بہت واضح ہے۔ عدالت نے یہ دیکھنا ہے کہ کوین بینچ کا فیصلہ قابل قبول شہادت ہے کہ نہیں۔ دوران سماعت جج محمد بشیر نے کہا پیر کو ہر حالت میں حتمی دلائل ختم کریں جبکہ منگل کو گواہ کو بلا لیتے ہیں۔ پیر کو وکیل مریم نواز امجد پرویز حتمی دلائل جاری رکھیں گے۔ العزیزیہ ریفرنس میں واجد ضیا منگل کو طلب کرلیا گیا جبکہ خواجہ حارث منگل کو العزیزیہ ریفرنس پر جرح جاری رکھیں گے۔ احتساب عدالت نے لندن فلیٹس ریفرنس کی سماعت پیر تک ملتوی  کر دی۔