Friday, January 21, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

سیاسی جماعتوں کی ریگولیٹری اداروں کو وزارتوں کے ماتحت کرنے کی مخالفت

سیاسی جماعتوں کی ریگولیٹری اداروں کو وزارتوں کے ماتحت کرنے کی مخالفت
December 20, 2016

 اسلام آباد(92نیوز)پیپلزپارٹی ، پی ٹی آئی اور جماعت اسلامی حکومت کے ریگولیٹری اداروں کو وزارتوں کے ماتحت کرنے کے فیصلے کے خلاف میدان میں آ گئے۔ عمران خان کہتے ہیں اس فیصلے سے واضح ہو گیا ہے کہ وزیراعظم ملک میں احتساب نہیں چاہتے جبکہ سراج الحق اور شاہ محمود قریشی نے بھی اس فیصلے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے ۔

تفصیلات کےمطابق ریگولیٹری اداروں کو وزارتوں کے ماتحت کرنے کا حکومتی فیصلہ اپوزیشن جماعتوں نے مسترد کر دیا کسی نے سپریم کورٹ جانے کا اعلان کیا تو کسی نے سخت الفاظ میں مذمت کی ۔  چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے اپنے ٹویٹ پیغام میں حکومت کے اس فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نوازشریف ملک میں شفاف احتساب نہیں چاہتے نوازشریف نے ریگولیٹری اتھارٹیز کی خودمختاری کو تباہ کر دیا ہے، اداروں کی خود مختاری پر حکومتی قدغن ناقابل قبول ہے۔

پیپلزپارٹی کے اہم رہنما اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کر دیا۔شاہ محمود قریشی نے یہ مسئلہ اسمبلی فورم پر اٹھا دیا کہتے ہیں کہ حکومت نے یہ فیصلہ کر کے نیپرا اور اوگرا کے تابوت میں دفن کر دیا ہے۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے لاہور میں  میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے فیصلے کی مذمت کی اور فوری واپسی کا مطالبہ بھی کیا۔ تحریک انصاف کے رہنما اسد عمر نے بھی حکومت کے اس فیصلے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ اپوزیشن نے اعتراضات اُٹھائے تو حکومتی رکن خواجہ آصف بھی سامنے آ ئے اور کہا کہ ریگولیٹری اتھارٹی کے حوالے سے  اکتیس دسمبر کو تمام صوبوں کے ساتھ مشاورت کی جائے گی  اور جو بھی تبدیلی آئے گی مشاورت سے آئے گی  تاہم نیپرا اور اوگرا کو متعلقہ وزارتوں کے ماتحت  ہی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔