Thursday, January 27, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

سیاست دانوں کو جوتا مارنے کی رسم دنیا بھر میں پھیل چکی ہے

سیاست دانوں کو جوتا مارنے کی رسم دنیا بھر میں پھیل چکی ہے
March 11, 2018

اسلام آباد ( 92 نیوز ) سیاست دانوں کو جوتا مارنے کی رسم دنیا بھر میں پھیل چکی ہے ، سابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش، ہیلری کلنٹن اور بھارتی اپوزیشن رہنما راہول گاندھی سمیت متعدد عالمی رہنما جوتا کلب کا حصہ بن چکے ہیں ۔

جوتا کلب میں شامل ہونے والوں میں سابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش کا نام بھی شامل ہے ، جن پر 14 دسمبر 2008  کو ایک عراقی صحافی منتظر الزیدی نے جوتا دے مارا تھا ، تاہم صدر بش اس میں بال بال بچ گئے تھے ۔

سابق امریکی وزیرخارجہ اور صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن کو بھی 10 اپریل 2014 کو جوتےسے نشانہ بنایا گیا ، لاس ویگاس میں ایک خاتون نے تقریب کے دوران انہیں جوتا مارا جو خوش قسمتی سے ہیلری کو نہیں لگ سکا ۔

عراق جنگ میں امریکا کا ساتھ دینے کی پاداش پر آسٹریلیا کے سابق وزیراعظم جان ہاورڈ کو جوتا کلب میں شامل کرلیا گیا، 2010 میں ایک ٹاک شو نے عراقی شہریوں کے نام پر جان ہاروڈ پر دو جوتوں سے حملہ کیا ۔

ایران کے سابق صدر محمود احمدی نژاد کو 2013 میں دورہ مصر کے دوران ایک شامی شخص نے جوتا مارنے کی کوشش کی ، حملہ آور شامی خانہ جنگ میں صدر بشارالاسد کا ساتھ دینے پر احتجاج کررہا تھا ۔

بھارتی اپوزیشن جماعت کانگریس کے صدر راہول گاندھی بھی عالمی رہنماؤں کے جوتا کلب کے رکن ہیں ، ان پر ایک بار ریلی کی قیادت جبکہ دوسری بار جلسے سے خطاب کے دوران جوتا پھینکا گیا تھا ۔

اسی طرح بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال پر متعدد بار جوتوں اور تھپڑوں کی برسات کے علاوہ سیاہی بھی پھینکی جاچکی ہے۔