Friday, January 28, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

سپریم کورٹ نے میڈیکل کی طالبہ عاصمہ کے قتل کا نوٹس لے لیا

سپریم کورٹ نے میڈیکل کی طالبہ عاصمہ کے قتل کا نوٹس لے لیا
January 30, 2018

اسلام آباد (92 نیوز) سپریم کورٹ نے کوہاٹ میں میڈیکل کی طالبہ عاصمہ کے قتل کا نوٹس لے لیا ۔
چیف جسٹس نے کوہاٹ میں میڈیکل کی طالبہ کو قتل کا نوٹس لیتے ہوئے پوچھا کہ قتل کرنے والا ملک سے کیسے فرار ہوا، تفصیلات فراہم کی جائیں ۔
چیف جسٹس نے کہا کہ کہیں ایسا تو نہیں عاصمہ قتل کیس میں ایسا شخص ملوث ہے جس کی تحریک انصاف سے وابستگی ہے، کے پی کے پولیس کو تو تفتیش کا طریقہ ہی نہیں آتا، کیا پولیس کا کام صرف لوگوں کو ڈرانا ہے؟ ۔
سپریم کورٹ میں عاصمہ قتل کیس ازخود نوٹس کی سماعت کے دوران ڈی آئی جی مردان نے بتایا کہ 13 جنوری کو عاصمہ لاپتہ ہوئی، 14 جنوری کو عاصمہ کی لاش کھیتوں سے ملی ، پولیس کو رات گئے واقعہ سے آگاہ کیا ۔
چیف جسٹس نے پوچھا کہ کیا خیبر پختونخواہ میں فرانزک لیبارٹری موجود ہے؟ جس پر ڈی آئی جی نے کہا کہ آئندہ ہفتے تک فرانزک لیب مکمل فعال ہو جائے گی ۔
مردان جے آئی ٹی میں آئی جی ، ایم آئی ، آئی ایس آئی کے افسران شامل ہیں ۔ ملزم تاحال گرفتار نہیں ہوا۔ عدالت نے آئی جی اور آر پی او سے جواب طلب کرتے ہوئے سماعت آئندہ منگل تک ملتوی کر دی ۔
قبل ازیں عاصمہ رانی قتل کیس میں رشتہ نہ ملنے پر میڈیکل کی طالبہ کی جان لینے والے ملزم کے بھائی کو پولیس نے گرفتار کر کے میڈیا کے سامنے پیش کر دیا ۔
  ایف آئی آر میں نامزد دوسرا ملزم صادق اللہ آفریدی پکڑا گیا ۔ گرفتار صادق اللہ کیس کے مرکزی ملزم مجاہد اللہ کا بھائی ہے ۔ ڈی پی او کوہاٹ نے ملزم کو میڈیا کے سامنے پیش کر دیا ۔
ڈی پی او کوہاٹ کے مطابق سعودی عرب فرار ہونے والے مرکزی ملزم کی گرفتاری کے لئے ریڈ وارنٹ جاری کر دیئے گئے ہیں ۔
ادھر ملزموں کے چچا آفتاب عالم نے پریس کانفرنس میں متاثرہ خاندان کو قانونی معاونت فراہم کرنے کی پیش کش کی ۔
کوہاٹ سے پی ٹی آئی کے ایم این اے شہریار آفریدی نے وفاقی وزیر داخلہ سے مرکزی ملزم کی گرفتاری کے لئے اقدامات کا مطالبہ بھی کیا ۔
ڈی پی او کوہاٹ کے مطابق عاصمہ قتل کی واردات دن تین بجکر بیس منٹ پر ہوئی ۔ مقتولہ عاصمہ کو تیس بور کے پستول کے تین گولیاں ماری گئیں ۔