Sunday, December 4, 2022

سپریم کورٹ: فیصل آباد کا رہائشی 12سال بعد قتل کے الزام سے بری

سپریم کورٹ: فیصل آباد کا رہائشی 12سال بعد قتل کے الزام سے بری

اسلام آباد (92نیوز) 12سال بعد ایک اور ملزم کو انصاف مل گیا۔ سپریم کورٹ نے قتل کے الزام میں گرفتار شہزاد کو رہا کرنے کا حکم دیدیا۔ عدالت کا کہنا ہے کہ استغاثہ ملزم کےخلاف شواہد پیش نہیں کر سکا۔ تفصیلات کے مطابق تفتیشی نظام میں نقائص کی اور ایک مثال سامنے آگئی۔ قتل کے الزام میں 12سال جیل کی سلاخوں کے پیچھے گزارنے کے بعد ملزم کو آخرکار انصاف مل ہی گیا۔

ملزم شہزاد پر 2004ء میں یعقوب نامی شخص کے قتل کا الزام تھا جس کا مقدمہ تھانہ غلام محمد فیصل آباد میں درج کیا گیا۔ ملزم شہزاد کو کرائم کورٹ نے سزائے موت سنائی تھی۔ لاہور ہائیکورٹ میں اپیل آئی تو عدالت عالیہ نے سزائے موت کو عمرقید میں تبدیل کردیا۔

پھر معاملہ سپریم کورٹ پہنچا۔ جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں 3رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ چشم دید گواہان کی موقع پر موجودگی ثابت نہیں ہوسکی۔ استغاثہ ملزم کےخلاف کوئی شواہد پیش نہیں کرسکا۔ عدالت نے ملزم کی رہائی کا حکم دیتے ہوئے کیس کو نمٹا دیا۔