Friday, December 2, 2022

سندھ میں آوارہ کتوں کی یلغار ، شہری شدید خوف و ہراس کا شکار

سندھ میں آوارہ کتوں کی یلغار ،  شہری شدید خوف و ہراس کا شکار
کراچی ( 92 نیوز) سندھ بھر میں آوارہ کتوں کی یلغار سے شہری شدید خوف و ہراس کا شکار ہیں ، رواں سال کتوں کے حملوں سے 22 انمول انسانی زندگیوں کا خاتمہ ہوا جبکہ ایک لاکھ 40 ہزار سے زائد افراد متاثر ہوئے ،  اکثر شہروں کے سرکاری اسپتال میں ویکسین نایاب ہے ۔ سندھ میں سگ گزیدگی واقعات میں تشویشناک اضافہ ہو چکا ہے ،  محکمہ صحت کے مطابق رواں سال سندھ کے مختلف اضلاع میں آوارہ اور پاگل کتوں کے حملوں میں بائیس قیمتی انسانی زندگیوں کا خاتمہ ہوا جبکہ ایک لاکھ چالیس ہزار سے زائد افراد متاثر ہوئے۔ سندھ کے تین اضلاع نہایت خطرناک، سب سے زیادہ قمبر، دادو اور نوشہرو فیروز کے شہری کتوں کا نشانہ بنے، ٹاؤن، میونسپل کمیٹی اور ڈسٹرکٹ کاونسل کے ذمہ دار خاموش تماشائی، شہریوں کو لاوارث چھوڑ دیا، کوئی مہم شروع نہ کی جاسکی۔ حیدرآباد، لاڑکانہ، سکھر، شکارپور سمیت دیگر شہروں میں بھی صورتحال تسلی بخش نہیں، یومیہ بنیاد پر ڈاگ بائٹ کیس رپورٹ ہورہے ہیں، دوسری جانب سندھ کے سرکاری اسپتالوں میں ویکسین بھی نایاب ہے، شہری کراچی میں جناح، سول اور نجی اسپتالوں کا رخ کرنے پر مجبور ہیں۔ اٹھارہ ستمبر کو ڈاگ بائٹ سے متاثرہ معصوم میر حسن کا شکارپور اور لاڑکانہ سول اسپتال میں ڈاکٹرز نے علاج سے انکار کیا تو بے بس ماں بچے کو لیکر کمشنر آفس اینٹی ریبیز سنٹر لائی، وہاں بھی علاج نہ ہوا اور معصوم بچہ ماں کی گود میں تڑپ ٹڑپ کر دم توڑ گیا ۔ لاڑکانہ میں ڈاگ بائٹ کا شکار چھ سالہ حسنین بھی نازک حالت میں این آئی سی ایچ کراچی میں زیر علاج ہے۔