Friday, December 9, 2022

سندھ حکومت میٹرک امتحانات میں بوٹی مافیا کے سامنے بے بس

سندھ حکومت میٹرک امتحانات میں بوٹی مافیا کے سامنے بے بس

کراچی (92 نیوز) سندھ حکومت میٹرک امتحانات میں بوٹی مافیا کے سامنے بے بس ہوگئی۔ امتحانات میں وقت سے پہلے پرچے آؤٹ ہونا معمول بن گیا۔

 سندھ میں محکمہ تعلیم کی کارکردگی پر سوالیہ نشان لگ گیا۔ پورے صوبے  میں میٹرک کے امتحانات میں بوٹی مافیا بے قابو ہو گیا۔ وقت سے  پہلے ہی پرچے آؤٹ ہونا معمول بن چکا ہے۔

 امتحانی سنٹرز میں اساتذہ کی موجودگی میں  امیدواروں کی جانب سے کتابوں اور موبائل فون کے ذریعے  نقل کا سلسلہ  دھڑلے کے ساتھ جاری ہے۔

سکھر ،گھوٹکی،اور  نوشہرو فیروز میں دسویں جماعت کا ریاضی کا پرچہ  وقت سے  قبل ہی آؤٹ ہو کر  بوٹی مافیا کی جانب سے بنائے گئے واٹس ایپ گروپوں میں شیئر ہو گیا۔ شکارپورمیں  ہونے والا نویں جماعت کا کیمسٹری کا  پرچہ بھی  وقت سے قبل آؤٹ ہوگیا۔

 دادو میں  بھی  طلبہ امتحانی مراکز میں سرعام  نقل   کرتے رہے۔ پولیس اور انتظامیہ خود اپنی موجودگی میں امیدواروں  کو نقل کرانے میں مدد فراہم کرتی رہی جبکہ نقل روکنے کیلئے امتحانی مراکز سے باہر  تعینات پولیس کے جوان محض دکھاوے کیلئے ہی تعینات کیے گئے تھے۔

شہر قائد میں بھی نقل کا بازار گرم رہا ۔ چیئرمین میٹرک بورڈ سعید الدین نے  سرجانی ٹاؤن میں  امتحانی سنٹر کا اچانک دورہ کیا۔ انتظامیہ کی جانب سے رولز کی خلاف ورزی دیکھنے میں آئی ، ایک سیٹ پر  دو طلبا کو ایک ساتھ  بٹھایا گیا۔ طلبا با آسانی ایک دوسرے کی نقل کرکے پرچہ حل کرتے رہے ۔ چھاپے کے دوران طلبا کے پاس سے نقل کا مواد بھی بر آمد ہوا۔