Tuesday, November 30, 2021
English News آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
English News آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

سابق سفارتکار مسعود خان بھاری اکثریت سے آزادکشمیر کے چھبیسویں صدر منتخب

سابق سفارتکار مسعود خان بھاری اکثریت سے آزادکشمیر کے چھبیسویں صدر منتخب
August 16, 2016
مظفرآباد (92نیوز) مسلم لیگ (ن) کے مسعود خان بھاری تعداد میں ووٹ لے کر آزاد کشمیر کے چھبیس ویں صدر منتخب ہو گئے۔ مسلم کانفرنس اور پاکستان تحریک انصاف نے انتخاب کا بائیکاٹ کیا۔ تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے نامزد امیدوار مسعود خان آزاد کشمیر کے صدر منتخب ہو گئے ہیں۔ صدر کے انتخاب کے لیے پولنگ کا آغاز صبح دس بجے ہوا اور دوپہر تین بجے تک جاری رہا۔ مسلم لیگ (ن) کے صدارتی امیدوار مسعود خان نے بیالیس ووٹ حاصل کئے جب کہ ان کے مدمقابل پیپلزپارٹی کے امیدوار چوہدری لطیف اکبر تھے جو صرف چھ ووٹ حاصل کرسکے۔ ادھر مسلم کانفرنس اور پی ٹی آئی نے صدر کے انتخاب کا بائیکاٹ کیا۔ سابق وزیراعظم آزاد کشمیر سردار عتیق احمد خان نے پی ٹی آئی کے ماجد خان کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ن لیگ نے آزادکشمیر میں گزشتہ دو سال سے پری پول رگنگ شروع کررکھی تھی۔ آزاد کشمیر میں صدارتی انتخاب کے موقع پر جموںوکشمیر پیپلزپارٹی کے کارکنوں نے گیلانی چوک سے مرکزی ایوان صحافت تک ریلی نکالی جس میں سردار خالد ابراہیم نے بھی شرکت کی اور بیس اگست کو عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کے ساتھ ساتھ نئے صدر کی حلف برداری کے دن آزاد کشمیر بھر میں احتجاج کا اعلان بھی کیا۔ دریں اثنا آزادکشمیر کے چھبیسویں منتخب صدر مسعود خان نے 1980ءمیں فارن سروسز آف پاکستان کے لیے کوالیفائی کیا۔ اپنے پیشہ ورانہ سفارتی کیریئر کے دوران انہوں نے چین، ہالینڈ، اقوام متحدہ اور امریکا میں اہم سفارتی ذمہ داریاں نبھائیں۔ مسعود خان سفارتی حلقوں میں اہم مقام رکھتے ہیں۔ انہوں نے اپنے سفارتی کیرئیر کے دوران چین میں سفیر کی حیثیت سے خدمات سر انجام دیں جس پر انہیں چینی بیوروکریسی میں بھی خاصی پذیرائی ملی۔ مسعود خان اس سے قبل اسلام آباد میں ڈائریکٹر جنرل انسٹیٹیوٹ آف اسٹریٹیجک اسٹیڈیز کے طور پر خدمات سرانجام دے رہے تھے۔ مسعود خان کو ستمبر 2008ءمیں اقوام متحدہ میں پاکستان کا مستقل مندوب بنایا گیا۔ ان کی سروس 7 فروری 2015ءکو ختم ہوئی۔ اسی طرح مسعود خان 2005ءمیں عالمی سمٹ برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی میں چیئرمین کمیٹی کے طور پر بھیجے گئے۔ 2003ءسے 2005ءتک وہ دفتر خارجہ کے ترجمان کے طور پر فرائض سرانجام دیتے رہے۔ نومنتخب صدر مختلف سفارتی کمیٹیوں کے ممبر بھی رہے جن میں عالمی تنظیم برائے مہاجرین‘ گروپ آف 77 اور عالمی تنظیم برائے مزدور شامل ہیں۔