Thursday, October 6, 2022

زمین کی رفتار میں کمی،2018 میں زلزلے زیادہ آئیں گے،سائنسدان

زمین کی رفتار میں کمی،2018 میں زلزلے زیادہ آئیں گے،سائنسدان

نیو یارک (92 نیوز) امریکی سائنسدانوں نے خبردار کیا ہے کہ 2018 میں تباہ کن زلزلوں میں اضافہ ہو سکتا ہے انہوں نے اس خدشے کا اظہار زمین کی گردش کرنے کی رفتار میں کمی کی بنیاد پر کیا۔
امریکا کی جیولوجیکل سوسائٹی کے سالانہ اجلاس میں پیش کی گئی رپورٹ میں بتایا گیا کہ اگرچہ زمین کے گردش کرنے کی رفتار میں کمی بہت ہی معمولی ہے جو 24 گھنٹے میں ملی سیکنڈ کی تبدیلی ہے لیکن اس سے بڑے پیمانے پر زیر زمین توانائی کا اخراج ممکن ہے۔
سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ زمین کی گردش کی رفتار اور زلزلوں میں کافی حد تک تعلق پایا جاتا ہے اور اس بنیاد پر یہ کہا جا سکتا ہے کہ اگلے سال ممکنہ طور پر تباہ کن زلزلوں میں اضافہ ہو گا۔
سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ گزشتہ 117 سال کے زلزلوں کی تحقیق میں بھی یہی بات سامنے آئی ہے کہ ان ادوار میں زلزلے زیادہ آئے جب زمین کی گردش کی رفتار میں کمی ہوئی۔
سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ زمین کی گردش کرنے کی رفتار میں یہ کمی کیوں واقع ہوتی ہے اس کے بارے میں علم نہیں ہے تاہم آئندہ سال 20 بڑے زلزلے دنیا میں تباہی مچا سکتے ہیں۔