Wednesday, January 26, 2022
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK) آج کا اخبار English News
English News آج کا اخبار
براہراست ٹی وی براہراست نشریات(UK)

ریگولیٹری  باڈیز کو وزارتوں کے ماتحت کرنے پر حکومت کا سینیٹ میں جواب جمع

ریگولیٹری  باڈیز کو وزارتوں کے ماتحت کرنے پر حکومت کا سینیٹ میں جواب جمع
December 21, 2016

اسلام آباد(92نیوز)پانچ ریگولیٹری باڈیز کو وزارتوں کے ماتحت کرنے پر حکومت نے سینیٹ میں جواب پیش کردیا۔ چئیر مین رضا ربانی کا کہنا ہے کہ درحقیقت ریگولیرٹری اداروں کو لائن حاضر کیا گیا ہے، مشترکہ مفادات کونسل کو نظر انداز کیا گیا۔

 تفصیلات کےمطابق سینیٹ کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوۓ رضا ربانی نے کہا کہ وفاقی قانون سازی فہرست میں ریگولیٹری  اداروں کا  ذکر نہیں ہے۔ کے پی کے اور سندھ نے اس معاملے پر اعتراض کیا تھا۔ اس معاملے میں صوبوں کی منظوری ضروری ہے, مشترکہ مفادات کونسل کی منظوری کے بغیر وزیر اعظم اس معاملے میں رول 33 کا استعمال نہیں کر سکتے۔ اپوزیشن لیڈر اعتزاز احسن نے کہا کہ,, جن اداروں نے وزارتوں کی نگرانی کرنی ہے انہیں ہی وزارتوں کے ماتحت کیا گیا ہے۔ ریگولیٹری باڈیز کے چیئرمینز کا فرض ہے کہ اس نوٹیفکیشن کو نظر انداز کر دیں۔  وزیر قانون زاہد حامد نےسینیٹ میں وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نے پانچ ریگولیٹرزکا صرف انتظامی کنٹرول وزارتوں کے سپرد کیا ہے۔  وزیراعظم کو ریگولیٹرز کو ایک ڈویژن سے دوسری ڈویژن میں منتقلی کا اختیار ہے۔  سینیٹرمشاہد اللہ خان نے کہا کہ چند ادارے براہ راست وزیر اعظم کے ماتحت تھے جنہیں متعلقہ وزارتوں کو واپس بھیجا ہے۔  وزارت خارجہ نےسینیٹ کو بتایا کہ سعودی عرب کی مختلف جیلوں میں 364 قیداور354 پاکستانی نظربند ہیں ، قومی اسمبلی سے منظور شدہ پبلک پرائیوٹ پارٹنر شپ اتھارٹی بل سینیٹ میں پیش کیا گیا۔ چیئرمین سینیٹ نے بل متعلقہ قائمہ کمیٹی کے سپردکر دیا۔ سینیٹ نےکمپنی کے قانونی مشیران کی تقرری ترمیمی بل 2016  منظور کر لیا۔