Friday, December 3, 2021
English News آج کا اخبار براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی
English News آج کا اخبار
براہراست نشریات(UK) براہراست ٹی وی

رینجرز پکڑے گی تو بلڈپریشر تو بڑھے گا!!! سپریم کورٹ نے ڈاکٹر عاصم کو ذاتی معالج فراہم کرنے سے انکار کر دیا

رینجرز پکڑے گی تو بلڈپریشر تو بڑھے گا!!! سپریم کورٹ نے ڈاکٹر عاصم کو ذاتی معالج فراہم کرنے سے انکار کر دیا
September 3, 2015
کراچی (92نیوز) سندھ رینجرز کے پراسیکیوٹر نے کہا ہے کہ ڈاکٹر عاصم کے تمام ٹیسٹ درست ہیں، انہیں کچھ ہوا تو ہم ذمہ دار ہوں گے۔ تفصیلات کے مطابق آج سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں ڈاکٹر عاصم حسین کی گرفتاری کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی۔ اس موقع پر پراسیکیوٹر سندھ رینجرز نے کہا کہ ڈاکٹر عاصم حسین کو کسی اسپتال کے بستر سے گرفتار نہیں کیا گیا۔ ایسا نہیں ہوسکتا کہ کوئی بڑا پکڑا جائے تو اس سے تفتیش نہ ہو۔ عاصم کو کچھ ہوا تو ہم ذمہ دار ہوں گے۔ ڈاکٹر عاصم کی گرفتاری کے خلاف درخواست کی سماعت پر ملزم کے وکیل کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ ڈاکٹر عاصم کو برین ٹیومر ہے جس کے لیے میڈیکل بورڈ تشکیل دیا جائے۔ پاکستان رینجرز کے ڈپٹی اسسٹنٹ ڈائریکٹر میڈیکل سروسز نے طبی رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر عاصم کے تمام ٹیسٹ آغا خان اسپتا ل سے کروائے گئے ہیں، تمام ٹیسٹ ٹھیک آئے ہیں۔ سپریم کورٹ کے جسٹس سجاد علی شاہ نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ جب رینجرز گرفتار کرے گی تو بلڈ پریشر بڑھے گا ہی۔ ایڈیشنل ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ ملزم سے سنگین جرائم کی تفتیش کر رہے ہیں۔ ضرورت پیش آئی تو فوری اسپتال میں داخل کروا دیں گے۔ شوگرایسی بیماری نہیں کہ ملزم کو اسپتال میں داخل کروایا جائے۔ جسٹس سجاد علی شاہ نے کہا کہ درخواست میں ڈاکٹر عاصم کی گرفتاری کو چیلنج ہی نہیں کیا گیا۔ آپ قانون کو چیلنج کریں، ہم نوٹس جاری کریں گے۔ عدالت نے ملزم کو ذاتی معالج فراہم کرنے سے متعلق زبانی درخواست مسترد کرتے ہو ئے رینجرز کی پیش کی گئی طبی رپورٹ پر اطمینان کا اظہار کیا۔ ساتھ ہی ڈاکٹر عاصم کی بیماری کی تشخیص کے لیے خرچ رقم رینجرز کو ادا کرنے کا حکم بھی دیا۔